ایک چپ کھائے گئی ہے مجھ کو  | ثروت زہرہ |

ایک چپ کھائے گئی ہے مجھ کو  | ثروت زہرہ |
ایک چپ کھائے گئی ہے مجھ کو  | ثروت زہرہ |

  

ایک چپ کھائے گئی ہے مجھ کو 

آگہی ڈھائے گئی ہے مجھ کو 

زندگی میرے سنورنے کے لیے 

درد پہنائے گئی ہے مجھ کو 

بے خودی آپ تلک لائی تھی 

سو وہی لائے گئی ہے مجھ کو 

آپ نے راکھ کیا اڑنے کو 

خاک دفنائے گئی ہے مجھ کو 

میرے ادراک کی مجبوری سے 

بات بہلائے گئی ہے مجھ کو 

چاند اس طور سے اترا شب میں 

رات گہنائے گئی ہے مجھ کو 

شاعرہ: ثروت زہرہ

Aik    Chup    Khaaey   Gai    Hay    Mujh   Ko

Aagahi    Dhaaey   Gai    Hay    Mujh   Ko

Zindagi    Meray     Sanwarnay    K    Liay

Dard    Pehnaaey     Gai   Hay    Mujh   Ko

Be    Khudi    Aap   Talak   Laai   Thi

So   Wahi    Laaey   Gai    Hay    Mujh   Ko

Aap   Nay   Raakh   Kya    Urrnay   KO

Khaak   Dafnaaey   Gai   Hay    Mujh   Ko

Meray    Idraak   KI   Majboori   Say

Baat    Behlaaey  Gai    Hay    Mujh   Ko

Chaand    Is   Taor    Say    Utra    Shab    Ko

Raat     Gehnaaey    Gai    Hay    Mujh   Ko

Poet: Sarwat    Zehra

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -