پی ایم ایل این شارجہ کے زیر اہتمام کانفرنس کا انعقاد، اے پی سی کے نتائج پر تبصرہ

پی ایم ایل این شارجہ کے زیر اہتمام کانفرنس کا انعقاد، اے پی سی کے نتائج پر ...
پی ایم ایل این شارجہ کے زیر اہتمام کانفرنس کا انعقاد، اے پی سی کے نتائج پر تبصرہ

  

دبئی (طاہر منیر طاہر) پاکستان میں انعقاد پذیر ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس کی گونج بیرون ملک بھی سنائی دینے لگی اور اس کانفرنس کے نتائج کے بارے تبصرے بھی ہونے لگے۔ پاکستان میں ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس جس میں پاکستان پیپلزپارٹی، مسلم لیگ ن، جی یو آئی، اے این پی، قومی وطن پارٹی، پختونخوا ملی عوامی پارٹی، بی این پی (مینگل)، جمعیت اہل حدیث اور پی ٹی ایم رہنما شامل تھے۔ یہ کانفرنس صرف پاکستان میں مقیم لوگوں بلکہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے لیے بھی بے حد اہم تھی کہ جس میں ملک و قوم کی بہترین کے لیے اہم فیصلے کیے گئے۔

آل پارٹیز کانفرنس منعقدہ پاکستان کے مستقبل میں ممکنہ نتائج کے بارے پاکستان مسلم لیگ ن کے زیراہتمام شارجہ میں بھی ایک کانفرنس ہوئی جس کا اہتمام پاکستان مسلم لیگ ن متحدہ عرب امارات کے چیئرمین محمد غوث قادری نے کیا تھا جس میں پاکستان پیپلزپارٹی گلف و مڈل ایسٹ کے صدر میاں منیر ہانس، پی ایم ایل این یو اے ای کے سینئر نائب صدر خواجہ عبدالوحید پال، سلمان ، ملک شہزاد یونس، چودھری راشد فاروق، عامر بشیر، عرفان اقبال طور، حاجی جمیل اسحق اور پاکستانی کمیونٹی کے دیگر لوگوں نے بھی شرکت کی۔

اس موقع پر میاں منیر ہانس، محمد غوث قادری اور خواجہ عبدالوحید پال نے اپنے گرانقدر خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں آل پارٹیز کانفرنس کا انقاد اس بات کا عکاس ہے کہ موجودہ حکومت کے دن اب گنے جاچکے ہیں۔ پاکستان پیپلزپارٹی کی میزبانی میں ہونے والی آل پارٹیز کانفرنس ملکی سیاست میں اہم اور مثبت کردار ادا کرے گی جس سے پاکستان کے موجودہ حالات میں بہترین آئے گی۔ مقررین نے کہا کہ ملک اس وقت شدید کرپشن، مہنگائی، بے روزگاری اور بدامنی میں گھرا ہوا ہے جبکہ موجودہ حکومت ملک کا نظم و نسق بہتر انداز میں چلانے میں بالکل ناکام ہوچکی ہے جبکہ عوام الناس بھی موجودہ حکومت کی کارکردگی سے بے حد نالاں اور پریشان ہیں اور ملک میں بڑی تبدیلی دیکھنا چاہتے ہیں اور بڑی تبدیلی کا ایک ہی راستہ ہے صاف او رشفاف انتخابات۔

مقررین نے کہا کہ پاکستان میں مختلف ادارے اپنے اختیار اور دائرہ کار سے تجاوز ہوکر کام کررہے ہیں انہیں اپنی حد میں رہنا چاہیے۔ ملک میں عوامی سپر میسی ہونی چاہیے اور اقتدار صحیح معنوں میں سویلین کے پاس ہونا چاہیے تاکہ وہ اپنی بہتری کے لیے فیصلے خود کرسکیں۔ مقررین نے کہا کہ پی پی پی اور پی ایم ایل این کے ادوار حکومت میں ملک نے جس قدر ترقی کی تھی موجودہ حکومت نے اپنی غلط پالیسیوں کی وجہ سے ملک کو تنزلی کی طرف دھکیل دیا ہے۔

پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد میاں نواز شریف کی تقریر پر تبصرہ کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ نواز شریف کی تقریر نے آل پارٹیز کانفرنس میں جان ڈال دی ہے اور عوام الناس کے سامنے حقائق کو بے نقاب کردیا گیا ہے۔ اب پاکستان کے عوام یہ بخوبی جانتے ہیں کہ ملک کون چلارہا ہے اور موجودہ حکومت کی حیثیت ایک کٹھ پتیلی سے زیادہ نہیں ہے۔ شرکائے تقریب نے آل پارٹیز کانفرنس کا ا نعقاد کرنے پر تمام شریک جماعتوں اور خصوصاً پاکستان پیپلزپارٹی کا شکریہ بھی ادا کیا اور کہا کہ موجودہ حالات میں آصف علی زرداری اور بلاول بھٹو زرداری نے ملک و قوم کی بقاءکے لیے اپنا فرض صحیح انداز میں نبھایا ہے۔

شارجہ میں ہونے والی کانفرنس سے پاکستان مسلم لیگ ن کے ایم این اے چودھری نورالحسن تنویر نے بھی بذریعہ ٹیلی فون خطاب کیا اور آل پارٹیز کانفرنس کے سنگ سنگ چلنے کا عندیہ دیا۔

مزید :

عرب دنیا -تارکین پاکستان -