ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے کیمرے پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کیساتھ منسلک 

   ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے کیمرے پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کیساتھ منسلک 

  

  لا ہو ر (کر ائم رپو رٹر) لاہور کی سیفٹی اینڈ سکیورٹی کو مزید بہتر بنانے کیلئے پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی اور پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے اشتراک سے اہم سنگ میل عبورکر لیا گیا۔ پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی میں منعقدہ تقریب میں ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے 325 کیمرے پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کیساتھ منسلک کر دئیے گئے  تفصیلات کے مطابق ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے کیمروں کو سیف سٹیز سسٹم کیساتھ منسلک کرنے کی تقریب پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی ہیڈ کوارٹر قربان لائن میں  منعقد ہوئی جس میں چیف آپریٹنگ آفیسرپنجاب سیف سٹیزا تھارٹی  ڈی آئی جی محمد کامران خان اور مینجنگ ڈائریکٹرپنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی مرزا نصیر عنایت سمیت جنرل منیجر آپریشنز ماس ٹرانزٹ اتھارٹی عزیر شاہ ودیگر افسران نے شرکت کی  اس موقع پر چیف آپریٹنگ آفیسر پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی ڈی آئی جی محمد کامران خان نے بتایا کہ  قانون نافذ کرنے والے اداروں کو تفتیش کیلئے کیمروں کی فوٹیج دستیاب ہوگی جس سے انکی بھرپور معاونت ہوسکے گی۔ 

انکا مزید کہنا تھا کہ دنیا بھر میں کرائم کنٹرول کیلئے نجی کیمروں کو حکومتی مانیٹرنگ سسٹم سے منسلک کیا جاتا ہے اور اسی طرح بڑے اربن سینٹرز کی مکمل مانیٹرنگ ممکن بنائی جاتی ہے۔مینجنگ ڈائریکٹرماس ٹرانزٹ  اتھارٹی مرزا نصیر عنایت کا کہنا تھا کہ راولپنڈی اور ملتان میں بھی ماس ٹرانزٹ کے کیمروں کی انٹیگریشن  پر کام کیا جائیگا۔اس موقع پر جنرل مینیجر آپریشنز ماس ٹرانزٹ اتھارٹی عزیر شاہ نے کہا کہ ماس ٹرانزٹ اتھارٹی اور پنجاب سیف سٹیز اتھارٹی کا اشتراک اہل لاہور کیلئے مفید ثابت ہوگا اور قومی مفاد میں اس اشتراک کو مذید تقویت دی جائے گی۔

مزید :

علاقائی -