دباؤ میں فیصلوں سے ملک و ریاست کا نقصان ہوگا: اسفند یارولی

  دباؤ میں فیصلوں سے ملک و ریاست کا نقصان ہوگا: اسفند یارولی

  

     پشاور (سٹی رپورٹر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے کہا ہے کہ مبینہ دبا میں کئے گئے فیصلوں سے نقصان ملک اور ریاست کا ہوگا، آج بھی یہ تاثر دیا جارہا ہے کہ طاقتور کیلئے ایک قانون اور کمزورکیلئے دوسرا قانون ہے۔ریاستی اداروں، ججز، پولیس افسران کو دھمکیاں دی گئیں لیکن بار بار معافی مانگنے کا کہا گیا۔ اسلام آباد ہائیکورٹ کے فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے اے این پی سربراہ اسفندیارولی خان نے کہا کہ اگر قانون یہی ہے تو پھر توہین عدالت اور اسی نوعیت کے کیسز کا فیصلہ ہر ایک کیلئے یہی ہونا چاہئیے۔ سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی،دانیال عزیز، نہال ہاشمی اور طلال چوہدری کو معافی مانگنے کے باوجود نااہل کیا گیا۔ایک ہی نوعیت کے کیسز میں دو قسم کے فیصلوں سے یہی تاثر دیا جارہا ہے کہ طاقتور اور کمزور کیلئے الگ قانون ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ایک طرف منتخب پشتون ایم این اے علی وزیر اور دوسری طرف عمران نیازی، فیصلے عوام کے سامنے ہیں۔ ایک نہیں دو پاکستان کا تصور ختم کرنا ہوگا بصورت دیگر ملک میں انارکی پھیلے گی۔کسی کو لاڈلا بنانے سے ملک کا بہت نقصان ہوچکا ہے، اب ملک کو آئین کے مطابق چلنے دیں۔ آئین میں ہر شخص اور ہر ادارے کے اختیارات درج ہیں، ہر جرم کی سزا بھی قانون میں موجودہے۔

مزید :

صفحہ اول -