ٹرانس جینڈر بل کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں،مولانا عبدالرحمن سلفی

ٹرانس جینڈر بل کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں،مولانا عبدالرحمن سلفی

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)ممتاز عالم دین امیر جماعت غربااھلحدیث پاکستان ورئیس جامعہ ستاریہ الاسلامیہ مولاناعبدالرحمن سلفی ملک کے جید علما  مولانا عبد العزیز نورستانی، شیخ الحدیث مولانا محمود احمد حسن، مولانا پروفیسر حافظ محمد سلفی، علامہ ڈاکٹر عامرعبداللہ محمدی، مولانا مفتی انس مدنی، علامہ عبدالخالق آفریدی،مولانا زاہد ہاشمی الازہری، مولانا فضل ربی، حاجی عبدالحنان بندہانی، مولاناسیدعبدالرحیم نعیم شاہ، مولانا ڈاکٹر مفتی منور ذکی، مولانامفتی عبدالحنان سامرودی، مولانامفتی صہیب شاہد، مولانامفتی جاسم سلفی، مولاناابرہیم جونا گڑھی، مولانا قاری شیر حقانی، مولانافضل جلال، مولانا طفیل عاطف، مولانابرہان الدین سلفی ودیگر علما کی کثیر تعداد نے اپنے مشترکہ بیانیہ میں کہا کہ پاکستان کے آئین میں سپریم قرآن وسنت ہے کسی کو یہ حق حاصل نہیں ہے کہ وہ قرآن وسنت کے خلاف کوئی  فیصلہ کرے۔یاد رہے گذشتہ عرصہ سے ایک سازش کے تحت ملک میں بیرونی آقاں کی خوشنودی اور حرام دولت کے حصول کیلیے جو اس گناہ کا حصہ بنے ہوئے ہیں وہ اپنی آخرت کو خراب کر رہے ہیں علما کرام نے کہا  ملک میں بے حیائی فحاشی عریانی کو فروغ دینے کے لیے ایک منظم سازش جاری ہے اور اب اس  کو عملی شکل دینے کے لیے ٹرانس جینڈر بل کے زریعہ رائج کرنا چاہتے ہیں   پارلیمنٹ میں بیٹھے تمام ارکان اسمبلی کو چاہیے وہ اس کے  خلاف کھڑے ہو جائے اور جنہوں نے اس کی حمایت کی ہے وہ اللہ تعالی سے توبہ کریں یہ  بہت بڑا گناہ عظیم ہے اللہ کے عذاب کو دعوت دینے کے مترادف ہے علما نے کہا اللہ کے  پیغمبر علیہ السلام روکنے کے باوجود  جب قوم لوط  بعض نہیں آء تو اس گناہ کی پاداش میں اس قوم کو تباہ کردیا گیا آسمان سے اللہ نے اپنا عذاب  بھیجا علمانے  حکمرانوں کو متنبہ کیا  اگر فوری طور پر اس عمل سے بعض نہیں آئے اور  اس بل کو واپسی نہیں لیا تو پورے ملک سے شدید ردعمل آئیگا جس کے آگے حکومت نہیں ٹھر سکے گی علمانے کہا ہم کسی صورت اپنی قوم کو تباہ ہوتے نہیں دیکھ سکتے اپنا فرض نبھانا جانتے تمام مکاتب فکر کے علما اس پر متفق ہیں یہ بل فوری واپس لیا جائے البتہ مخصوص افراد جو بہت کم ہیں انہیں معاشرے میں رہنے کے اسلام کے دائرے میں رہتے ہوئے تمام  حقوق حاصل ہونے چاہیں اور انہیں جو مشکالات ہے وہ دور کی جائیں تو کوء حرج نہیں  علما نے  صدر مملکت،چیف آف آرمی اسٹاف، سپرم کورٹ، شریعت کورٹ،اسلامی نظریاتی کونسل سے کہا وہ اپنا کردار ادا کریں  ٹرانس جینڈر بل سے انتہائی تشویش ہے جس کو مکمل طور پر مسترد کرتے ہیں علما اکرام نے اعلان کیا ہے کہ جمعہ 23 ستمبر کو ملک بھر کی مساجد میں   نفاذ شریعت پر علما  خطبات جمعہ  دینگے  اور یہ احتجاج کا پہلا مرحلہ ہے  اور جلد ملک بھر  کے تمام مکاتب فکر علما کا اجلاس بلایا جائے گا جس میں آئندہ کا پروگرام طے کیا جائیگا

مزید :

پشاورصفحہ آخر -