کھانے کی شکایت کرنا بھارتی پولیس اہلکار کو مہنگا پڑگیا، بڑی سزا مل گئی

کھانے کی شکایت کرنا بھارتی پولیس اہلکار کو مہنگا پڑگیا، بڑی سزا مل گئی
کھانے کی شکایت کرنا بھارتی پولیس اہلکار کو مہنگا پڑگیا، بڑی سزا مل گئی
سورس: Screengrab

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) حالیہ دنوں بھارت سے ایک پولیس اہلکار کی ویڈیو انٹرنیٹ پر بہت وائرل رہی، جس میں وہ محکمے کی طرف سے اہلکاروں کو ملنے والے انتہائی ناقص کھانے کی شکایت کر رہا ہوتا ہے۔ یہ اہلکار اب کہاں ہے؟ اس حوالے سے ایسی خبر آ گئی ہے کہ ہر سننے والا سٹپٹا کر رہ گیا۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق اس اہلکار کا نام منوج کمار ہے جو ضلع علی گڑھ کا رہائشی ہے۔وہ ضلع فیروز آباد میں تعینات تھا جب اس نے ویڈیو میں پولیس اہلکاروں کو ملنے والا کھانا دکھایا اور کہا کہ ایسا کھانا تو کتے بھی نہیں کھائیں گے جو ہم پولیس والوں کو ملتا ہے۔

 اس شکایت کی پاداش میں اعلیٰ حکام نے منوج کمار کا تبادلہ گھر سے 600کلومیٹر دور ضلع غازی آباد میں کر دیا ہے۔26سالہ منوج کمار کو محکمہ پولیس کے لیے شرمندگی کا سبب بننے کا مورد الزام ٹھہرایا گیا ہے اور سزا کے طور پر اس کا تبادلہ کیا گیا ہے۔ منوج کمار نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ”میرے گھر میں دو نوعمر بھائی اور ایک غیرشادی شدہ بہن ہے۔ میرے ماں باپ بوڑھے ہیں۔ میں گھر کا واحد کفیل ہوں اور تمام ذمہ داریاں مجھ پر ہیں۔ میں اپنے گھر والوں سے 600کلومیٹر دور کیسے رہ سکتا ہوں؟مجھے سچ بولنے کی سزا دی جا رہی ہے۔ “

مزید :

بین الاقوامی -