برآمدی شعبوں کو بجلی فراہمی پر صفر سیلز ٹیکس کی سہولت ختم

برآمدی شعبوں کو بجلی فراہمی پر صفر سیلز ٹیکس کی سہولت ختم

  

اسلام آباد(آن لائن)وفاقی حکومت نے بجلی پیدا کرنے والی 9 نجی کمپنیوں کی طرف سے گیس سے پیدا کردہ بجلی کی ٹیکسٹائل، لیدر اور گارمنٹس سمیت 5 برآمدی شعبوں کو فراہمی پر صفر سیلز ٹیکس کی سہولت واپس لے کر 5 فیصد رعایتی سیلز ٹیکس پر بجلی سپلائی کی اجازت دے دی ہے۔اس ضمن میں فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) کی طرف سے باضابطہ طور پر ترمیمی سیلز ٹیکس جنرل آرڈر نمبر 35 جاری کردیا گیا ہے جس کے تحت 13 ستمبر 2007 کو جاری کردہ سیلز ٹیکس جنرل آرڈر نمبر 18میں ترامیم کردی گئی ہیں کہ عدنان پاور پرائیویٹ لمیٹڈ، جوبلی انرجی ، گیٹرو پاور ، بھنیرو انرجی لمیٹڈ، لکی انرجی ، این پی واٹر پروف ٹیکسٹائل ملز، نوین انڈسٹریز ، سیفائر انرجی لمیٹڈ اور ٹاٹا انرجی لمیٹڈ کو 5 ایکسپورٹ اورینٹڈ شعبوں کے لیے اشیا کی تیاری کے لیے استعمال ہونے والی بجلی کی گیس پر پیداوار کے لیے حاصل صفر سیلز ٹیکس کی سہولت واپس لے لی گئی۔

ہے، اب مذکورہ پاور کمپنیوں کی طرف سے سوئی سدرن گیس کمپنی سے حاصل کردہ گیس سے پیدا ہونیوالی بجلی کی ان ایکسپورٹ اورینٹڈ شعبوں کو فراہمی پر 5 فیصد سیلز ٹیکس عائد ہو گا۔

مزید :

کامرس -