سوئی ناردن گیس کا سیاسی بنیادوں پر بھرتی ہونیوالے ڈیڈھ ہزارملازمین فارغ کرنے کا فیصلہ

سوئی ناردن گیس کا سیاسی بنیادوں پر بھرتی ہونیوالے ڈیڈھ ہزارملازمین فارغ ...

  

   لاہور(لیاقت کھرل) سوئی نادرن گیس کمپنی نے سابق دور میں سیاسی بنیادوں پر بھرتی ہونیوالی ڈیڑھ ہزار سے زائد ملازمین کو مرحلہ وار ملازمت سے نکالنے کا فیصلہ کر لیا ہے اور پہلے مرحلہ میں ساڑھے چار سو سے زائد عارضی ملازمین کو نوکریوں سے فارغ کر دیا ہے”پاکستان“ کو ذرائع نے بتایا کہ سوئی گیس کمپنی نے مالی بحران اور بجٹ کی کمی کا بہانہ بنا کر سابق دور میں سیاسی بنیادوں پر بھرتی ہونے والے ہزاروں ملازمین کو مرحلہ وار نوکریوں سے فارغ کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے اور اس کیلئے فہرستوں کو حتمی شکل دی جا رہی ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ اس میں سب سے زیادہ لاہور ریجن اور دوسرے نمبر پر ملتان، تیسرے نمبر پر اسلام آباد اور چوتھے نمبر پر فیصل آباد ریجن اور گوجرانوالہ ریجن میں نوکریوں سے نکالے جانے والے ملازمین کے نام بتائے گئے ہیں اور اس میں زیادہ تر عارضی بنیادوں پر کام کرنے والے ملازمین کے نام بتائے گئے ہیں جو کہ گزشتہ کئی کئی سالوں سے سوئی گیس کمپنی میں ورک چارج(عارضی) بنیادوںپر کام کر رہے ہیں اور ان ملازمین میں بیشتر ملازمین کی تنخواہیں ٹھیکیداری نظام کے تحت دی جاتی ہے، سوئی گیس کمپنی کے ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ سوئی گیس حکام نے پہلے مرحلہ میں ساڑھے چار سو سے زائد ملازمین کو نوکریوں سے نکال دیا ہے۔ جس میں 180سے زائد ملازمین کو لاہور ریجن سے فارغ کیا گیا ہے جبکہ فیصل آباد ریجن، ملتان ریجن اور گوجرانوالہ سے عارضی ملازمین کو نکالا گیا ہے ، ذرائع نے بتایا ہے کہ نوکریوں سے فارغ کئے جانے والے ملازمین کی زیادہ تعداد بطور مزدور کام کرنے والوں کی بتائی گئی ہے ذرائع نے بتایا ہے کہ نوکریوں سے نکالے جانے والے ملازمین سابق دور میں بھرتی کئے گئے تھے اور ان ملازمین کے بارے بتایا گیا ہے کہ انہیں سابق دور میں سیاسی بنیادوں پر بھرتی کیا گیا تھا،ذرائع نے بتایا ہے کہ نوکریوں سے نکالے جانے والے ملازمین کے بعد گیس کے نئے کنکشن اور ایمرجنسی شکایات کی سروسز شدید متاثر ہو کر رہ گئی ہے اور اس میں لاہور ریجن میں نئے گیس کنکشن لگانے کا کام ٹھپ ہو کر رہ گیا ہے اس حوالے سے سوئی گیس کمپنی کے حکام کا موقف ہے کہ گیس کمپنی کو مسلسل بحران کا سامنا اور بجٹ میں شدید کمی کا سامنا ہے، جس کے باعث عارضی ملازمین کو نوکریوں سے نکالا گیا ہے۔جبکہ نوکریوں سے نکالے جانے والے ملازمین نے بچوں سمیت گیس کمپنی کے ہیڈ آفس کے گھیراﺅ کی دھمکی دے دی ہے اور کہا ہے کہ ایم ڈی نے نوٹس نہ لیا تو گیس کمپنی کے ہیڈ آفس کے سامنے احتجاجی کیمپ لگا کر ڈے اینڈ نائٹ احتجاجی دھرنا دیا جائے گا اور اس کے باوجود انہیں بحال نہ کیا گیا تو پارلیمنٹ پالیسی کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا جائے گا۔

سوئی

مزید :

علاقائی -