عدالتی احکامات کےبا وجود پولیس اہلکاروں کیخلاف مقدمہ درج نہ ہو سکا

عدالتی احکامات کےبا وجود پولیس اہلکاروں کیخلاف مقدمہ درج نہ ہو سکا

  

لاہور ( کرائم سیل) تھانہ فیصل ٹاؤن پولیس کا عدالتی احکامات کے باوجود پیٹی بھائیوں کے خلاف مقدمہ درج کر نے سے انکار ،متاثر ہ شخص کا آئی جی آفس کے باہراحتجاج ۔فیصل ٹاؤن کے علاقہ 34/Cکے رہائشی محمد ارشد نے آئی جی آفس کے باہر احتجاج کر تے ہوئے بتایا کہ لاہور ہائی کورٹ کمپلینٹ سیل میں تھا نہ فیصل ٹاؤن کے ممتاز یوسف اور شفیق SI،تنویر SIوغیرہ کے خلاف درخواست دی تھی کہ ان اہلکاروں نے اُسکو اغوا کرکے کئی روز تک محبوس رکھا،تشدد کا نشانہ بنایا اور گاڑی نمبر LEH9326 سمیت دیگر کاٖغذات چھین لیے جس پر لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس شاہد حمید ڈارنے مقدمہ درج کر نے کے احکامات دئیے جس پر عمل درآمد نہ ہو سکا اور پھر توہین عدالت کی درخواست پر مسٹر جسٹس اعجاز احمد نے پولیس اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کرنے اور توہین عدالت کی کارروائی میں ایس پی لیگل ماڈل ٹاؤن ،ایس ایچ او فیصل ٹاؤن کیخلاف سخت احکامات آ رڈر نمبر141/2014 جاری کیے اور 7روز میں رپورٹ جمع کروانے کاحکم جاری کیالیکن3ماہ گزرنے کے باوجود پولیس حکام نے نہ تو پولیس اہلکاروں کیخلاف مقدمہ درج کیا اور نہ ہی توہین عدالت کے احکامات پر عمل درآمد کیابلکہ پولیس اہلکار مجھے سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں ۔ محمد ارشد نے وزیر اعلیٰ پنجاب اور آئی پنجاب سے واقعہ کا نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔

مزید :

علاقائی -