پڑھے لکھے نوجوانوں کو ملازمتیں دینے کی بجائے ڈرائیور نہ بنایا جائے،بلال شیرازی

پڑھے لکھے نوجوانوں کو ملازمتیں دینے کی بجائے ڈرائیور نہ بنایا جائے،بلال ...

لاہور(جنرل رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ کے راہنما و صدر پاکستان مسلم لیگ یوتھ ونگ سید بلال مصطفی شیرازی نے پنجاب حکومت کی طرف سے اورنج کیب سکیم کے تحت رواں سال بے روزگار نوجوانوں کو1لاکھ گاڑیاں دینے کے فیصلہ کو پڑھے لکھے نوجوانوں کے ساتھ مذاق قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایم فل ،ایم اے اور اعلیٰ تعلیم یافتہ نوجوان جو اپنے سنہرے مستقبل کیلئے جدوجہد میں مصروف ہیں اور پاکستان کی ترقی کیلئے کچھ کرنے کا عزم رکھتے ہیں انہیں اورنج کیب سکیم کے تحت ملازمتیں دینے کی بجائے ٹیکسی ڈرائیور نہ بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں حکومت نے اپنے 4سالہ دور اقتدار میں نوجوان طبقہ کیلئے کوئی پروگرام نہیں دیا اورنہ ہی پنجاب میں نئی انڈسٹریز کے قیام کی طرف توجہ دی گئی جس کی وجہ سے بے روزگاری کی شرح میں ہوشربا اضافہ ہو،پڑھا لکھا نوجوان طبقہ ہاتھوں میں ڈگریاں تھامے سڑکوں پر خوار ہورہا ہے لیکن کوئی ان کا پرسان حال نہیں۔ان خیالات کا اظہارانہوں نے مسلم لیگ ہاؤس میں یوتھ ونگ کے کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سید بلال مصطفی شیرازی نے کہا کہ اپنا روزگار سکیم کے تحت 50ہزار گاڑیاں دے کر پڑھے لکھے نوجوانوں کو ڈرائیور بنانے کی بجائے انہیں بلاسود قرضے فراہم کیے جائیں تاکہ وہ باعزت طور پر اپنا کاروبار کرکے باعزت روزی کماسکیں ۔انہوں نے کہا کہ پنجاب بھر کے محکموں میں سرکاری ملازمتوں پر عائد پابندی کا خاتمہ کیا جائے تاکہ پڑھے لکھے نوجوانوں کو باعزت روزگار کے مواقع فراہم ہوسکیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 1