وزیراعظم صادق امین نہیں رہے استعفیٰ دے دیں، مولا بخش چانڈیو

وزیراعظم صادق امین نہیں رہے استعفیٰ دے دیں، مولا بخش چانڈیو

  



حیدر آباد(اے این این)پیپلز پارٹی کے سیکرٹری اطلاعات مولابخش چانڈیو نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ نے کہہ دیاہے کہ وزیراعظم صادق اور امین نہیں رہے ،وہ عہدے سے مستعفی ہو جائیں تو ذلت سے بچ جائیں گے، نوازشریف سے پیار کرتا ہوں ، میرا مشورہ ہے کہ وزیراعظم وہ گھر چلے جائیں،ایک متعصب وزیر خود وزیراعظم کا دشمن ہے، ایان علی کا نام لیتے ہی اس کا ایمان جوش میں آجاتا ہے۔حیدرآباد میں پیپلز پارٹی کے دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے مولابخش چانڈیو نے کہا کہ ملکی تاریخ میں پہلی بار ایسا ہوا ہے کہ اعلیٰ ترین عدالت کے 2 ججوں نے وزیراعظم کو نااہل قرار دیا اور کہہ دیا کہ وزیراعظم صادق و امین نہیں رہے جبکہ 3 ججوں نے بھی کہا کہ وزیراعظم جھوٹے ہیں ان کے خلاف تحقیقات ہونی چاہیے۔ شرم کی بات ہے کہ مسلم لیگ ن والے کہتے ہیں کہ حکومت بچ گئی، سپریم کورٹ نے بوگس کہہ دیا اب نااہلی کے لیے مزید کیا چاہیے، نوازشریف اب عدالت عظمی سمیت پوری قوم کے سامنے صادق اور امین نہیں رہے۔ نوازشریف کے بہت سے رشتے دار وزیر ہیں، وہ اگر عہدہ چھوڑ بھی دیں تو اپنے خاندان میں سے کسی کو اپنے منصب پر بٹھا دیں لیکن اتنی تنقید سننے کے بجائے اس وقت وہ مستعفی ہوجائیں تو یہ ان کے لئے اور ملک کے لئے بہتر ہے، وزیراعظم سے استعفی کا مطالبہ اس لئے کر رہا ہوں کیوں کہ مجھے ان سے پیار ہے، اس وقت یہ صرف پیپلزپارٹی کا نہیں پوری قوم کا مطالبہ ہے اور اسی میں وزیراعظم کی عزت بھی ہے، آپ کو کسی بھی حالت میں جانا تو ہو گا۔ نوازشریف نے چند وزیر پیپلزپارٹی کے خلاف کھلے چھوڑے ہوئے ہیں جن میں سے ایک جھوٹا اور متعصب وزیر خود نواز شریف کا دشمن ہے۔ نوازشریف مسلم لیگ (ن)کے وزیراعظم ہیں اور مسلم لیگن ہر آمر کا ہتھیار رہی ہے، سب نے مسلم لیگ کو استعمال کیا اس لئے نوازشریف کو کچھ نہیں ہو گا لیکن تمام اپوزیشن جماعتوں کو مشترکہ پلیٹ فارم سے جدو جہد کرنی چاہیے۔ عمران خان کو پنجاب میں خوف ہے اس لئے وہ پیپلز پارٹی کو نشانہ بنارہے ہیں پی ٹی آئی رہنما ؤں سے کہتا ہوں کہ وہ اپنے لیڈر کو سمجھائیں کہ حکمران انگلی سے نہیں بلکہ سیاسی یکجہتی سے گھر جائیں گے، ہمیں بہتری کی امید ہے اس لئے خان صاحب کے خلاف نہیں بولتے۔مولا بخش چانڈیو نے عمران خان پر بھی مسلم لیگ ن سے چھپ کر اتحاد کرنے کا الزام لگا یا اور پی ٹی آئی والوں کو بھی مشورے دیئے ۔ مولا بخش کا کہنا تھاکہ عمران خان نے پنجاب میں رہنے کے لیے مسلم لیگ ن کے ساتھ مک مکا کر لیا ہے ۔

چانڈیو

مزید : صفحہ آخر