نواز شریف جے آئی ٹی میں سرخرو ہوں تو دوبارہ وزیراعظم بن جائیں: خورشید شاہ

نواز شریف جے آئی ٹی میں سرخرو ہوں تو دوبارہ وزیراعظم بن جائیں: خورشید شاہ

سکھر ( آن لائن ) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ 2014میں ہم نے وزیر اعظم نواز شریف کو استعفی نہ دینے کا مشورہ دیاتھا،اب استعفیٰ دینے کامشورہ دے رہے ہیں، پاناما فیصلے کے بعد اگر نوا زشریف جے آئی ٹی میں سر خرو ہوتے ہیں،تو دوبارہ وزیراعظم بن جائیں،سمجھ میں نہیں آتا کہ وزیراعظم کو استعفیٰ نہ دینے کی کیا ضد ہے؟وزیراعظم کے نیچے بننے والی جے آئی ٹی کا کوئی نتیجہ نہیں نکلے گا،قیامت کی نشانی یہ ہے کہ وزیر داخلہ شیر بن گئے ہیں،سابق چیف جسٹس نے دباؤ میں آ کر یوسف رضا گیلانی کو خط لکھنے کا کہا ، سابق صدر آصف زرداری کے سارے کیسزعدالتوں سے کلیئر ہوئے ہیں، عمران خان خیبرپختونخوا ہ میں کیا تبدیلی لائے ؟عمران خان کی سیاست سے نواز شریف اور مضبوط ہوں گے ،شیخ رشید کو عمران خان کو سمجھانا چاہیے،عمران خان خیبرپختونخوا کی صورتحال جاکردیکھیں ،وہ ماضی کو چھیڑیں گے تو انکے لئے بہت برا ہوگا۔ سکھر میں اپنی رہائش گاہ پر پریس کانفرنس کرتے ہوئے سید خورشید شاہ نے کہا کہ سندھ کے دیہی علاقوں میں پہلے کوئی رات میں گزرنہیں سکتا تھا لیکن اب عمران خان رات میں دادو میں جلسہ کرتے ہیں عمران خان کومشورہ دوں گا ایسا نہ کریں انہوں نے کہا کہ پاناما کیس میں عدالت نے جے آئی ٹی بنانے کا کہا ہے لیکن وزیراعظم کے نیچے بننے والی جے آئی ٹی کا کوئی نتیجہ نہیں نکلے گا، پرویزمشرف کے دورمیں وزیرداخلہ کو پروٹوکول دیاگیا۔ خورشید شاہ نے کہا کہ جمہوریت اور ریاست کی بقا کے لیے پیپلزپارٹی آگے ہوگی، پاکستان سیاست دانوں نے بنایا اورہم اسکی حفاظت کریں گے، حکمران جماعت اپنے ایم این اے کے حلقوں میں گیس فراہم کررہی ہے،کیا ہم پاکستان کے شہری نہیں ؂؟ملک میں بجلی کا بحران ہے اور خواجہ آصف کہتے ہیں بجلی چوری ہورہی ہے، سیپکو اور حیسکو میں لیسکو سے زیادہ بجلی کی لوڈشیڈنگ ہورہی ہے، بجلی لوڈشیڈنگ ختم کرنیکاوعدہ شہبازشریف اورتمام موجودہ حکمرانوں نے کیاتھا ۔

مزید : صفحہ آخر