ماں نے اپنے نوجوان بیٹے کا موبائل اٹھایا تو اس میں ایسی شرمناک ترین چیز دیکھ لی کہ خود ہی اپنے بیٹے کو پولیس کے پاس پہنچادیا

ماں نے اپنے نوجوان بیٹے کا موبائل اٹھایا تو اس میں ایسی شرمناک ترین چیز دیکھ ...
ماں نے اپنے نوجوان بیٹے کا موبائل اٹھایا تو اس میں ایسی شرمناک ترین چیز دیکھ لی کہ خود ہی اپنے بیٹے کو پولیس کے پاس پہنچادیا

  


لندن (نیوز ڈیسک)بھلا کوئی ماں کیونکر اپنی اولاد کو تکلیف میں دیکھنا چاہے گی لیکن ایک برطانوی خاتون کے ناہنجار بیٹے نے ایسی شرمناک حرکت کر ڈالی کہ اس کی ماں نے خود ہی اسے پولیس کے حوالے کردیا، اور جب تک اسے جیل نہیں بھیج دیا گیا چین سے نہیں بیٹھی۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ایلین کنگسٹن نامی خاتون کا 22 سالہ بیٹا سٹیفن ٹرینڈر اپنے موبائل فون کے زریعے پانچ نوعمر لڑکیوں کے ساتھ بے حیائی پر مبنی میسجز کا تبادلہ کررہا تھا۔ خاتون کا کہنا ہے کہ انہیں اس معاملے کی خبر اس وقت ہوئی جب انہوں نے بیٹے کے موبائل فون پر ایک میسج دیکھا جس میں انتہائی قابل اعتراض الفاظ استعمال کئے گئے تھے۔ انہوں نے جب موبائل فون کی مزید چھان بین کی تو درجنوں مزید ایسے میسج مل گئے جن سے پتہ چلتا تھا کہ ان کے بیٹے کی جانب سے کم از کم پانچ نوعمر لڑکیوں کو جنسی نوعیت کے میسجز بھیجے جارہے تھے۔

’میں نے اپنی 4 ماہ کی بچی کو نالے میں پھینک دیا کیونکہ جب میں حاملہ تھی تو اس نے۔۔۔‘ خاتون نے پولیس والوں کو بیٹی قتل کرنے کی ایسی وجہ بتادی کہ ہر کسی کا منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

ایلین کو جب معاملے کی سنگینی کا اندازہ ہوا تو انہوں نے فوری طور پر تھامس ویلی پولیس کو اطلاع کردی۔ آکسفورڈ کراﺅن کوٹ کی جانب سے جب سٹیفن کو ایک سال قید کی سزا سنائی گئی تو جج ماریہ لیم کا کہنا تھا ”مس کنگسٹن کی جتنی تعریف کی جائے کم ہے۔ انہوں نے وہ کام کیا جو کوئی بھی ماں نہیں کرنا چاہتی۔ انہوں نے کسی کی بیٹیوں کو تحفظ دینے کیلئے اپنے بیٹے کو قانون کے حوالے کردیا۔“ سزا پانے والے نوجوان سٹیفن کا کہنا تھا کہ وہ پہلے تو اپنی ماں پر سخت برہم تھا لیکن اب اس کا خیال ہے کہ انہوں نے ٹھیک ہی کیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس