’اب اس شہر میں فیصلہ کن لڑائی ہوگی‘ داعش نے عرب دنیا کے ایک اور معروف ترین شہر کو اپنا دارالحکومت بنالیا، کونسا شہر ہے؟ جان کر آپ بھی پریشان ہوجائیں گے

’اب اس شہر میں فیصلہ کن لڑائی ہوگی‘ داعش نے عرب دنیا کے ایک اور معروف ترین ...
’اب اس شہر میں فیصلہ کن لڑائی ہوگی‘ داعش نے عرب دنیا کے ایک اور معروف ترین شہر کو اپنا دارالحکومت بنالیا، کونسا شہر ہے؟ جان کر آپ بھی پریشان ہوجائیں گے

  



دمشق (مانیٹرنگ ڈیسک)شام و عراق کے وسیع و عریض علاقے پر خود ساختہ خلافت کا اعلان کرنے والی شدت پسند تنظیم داعش کو ہر محاز پر پسپائی کا سامنا ہے۔ کبھی یہ تنظیم اپنا آخری معرکہ سرزمین کفر کے مرکز میں پہنچ کر لڑنے کا اعلان کیا کرتی تھی لیکن اب چاروں جانب سے شکست اپنی جانب بڑھتے دیکھ کر آخری معرکے کا میدان تبدیل کرلیا ہے۔

ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے طابق داعش کے مرکز رقہ کی جانب امریکی حمایت یافتہ شامی افواج کی پیش قدمی کے بعد اس کے سرکردہ رہنما اور جنگجو 90 میل کی دوری پر واقع شہر دیر الزور جاپہنچے ہیں، اور اسے اپنا نیا دارالخلافہ قرار دے دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یہی وہ مقام ہے جہاں حق اور باطل کے درمیان آخری معرکہ برپاہو گا۔

شمالی کوریا نے امریکہ کو سنگین دھمکی دیدی، بحری بیڑے کو غرق کرنے کیلئے تیار ہیں:روڈنگ

رپورٹ کے مطابق امریکی ڈرونز نے ہزاروں کی تعداد میں داعش کے جنگجوﺅں کو رقہ سے دیرالزور کی جانب جاتے ہوئے دیکھا ہے۔ رقہ پر قبضے کیلئے گزشتہ سال آپریشن کا آغاز کیا گیا تھا اور اب داعش کے جنگجوﺅں کے فرار کی صورت میں یہ ہدف حاصل ہوتا نظر آرہا ہے۔

تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ داعش اپنی خود ساختہ خلافت کو شام اور عراق سے نکال کر یورپ تک پھیلانے کے دعوﺅں سے دستبردار ہوچکی ہے۔ اب اس کا دعویٰ یہ نہیں ہے کہ حق اور باطل کا آخری معرکہ یورپ میں ہوگا بلکہ یہ اپنے جنگجوﺅں سے کہہ رہے ہیں کہ آخری معرکے کا میدان دیر الزور ہے، کیونکہ اب اس شہر سے باہر نکل کر لڑنا ان کے بس میں نہیں رہا۔

مزید : بین الاقوامی