بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات محدود کئے گئے ہیں تو اسکا عدالتی جائزہ لیں گے ،ہائی کورٹ

بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات محدود کئے گئے ہیں تو اسکا عدالتی جائزہ لیں گے ...
بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات محدود کئے گئے ہیں تو اسکا عدالتی جائزہ لیں گے ،ہائی کورٹ

  



لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے قراردیا ہے کہ سننے میں تو یہی آ رہا ہے کہ بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات محدود کئے گئے ہیں ،اگر ایسا ہے تو کوئی نوٹیفکیشن، کوئی ترمیم تو حکومت نے کی ہوگی؟ جس کا عدالتی جائزہ لیا جاسکتا ہے ۔

دھرنوں او رلاک ڈاون سے ملکی ترقی کے خلاف ساز ش کی گئی،سابق حکمرانوں نے بجلی کے نام پر قوم سے کھیل کھیلا:شہباز شریف

چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے یہ ریمارکس بلدیاتی نمائندوں کو مکمل اختیارات نہ دینے کے خلاف دائردرخواست پر محکمہ بلدیات کے ذمہ دار افسر کو طلب کرتے ہوئے دیئے ۔یہ درخواست محمود اختر نقوی کی طرف سے دائر کی گئی ہے ،درخواست گزار کا موقف ہے کہ آئین کا آرٹیکل 140 (اے )مکمل فعال بلدیاتی نظام کامتقاضی ہے لیکن پنجاب حکومت بلدیاتی نمائندوں کو مکمل اختیارات نہیں دے رہی ہے جس کے باعث بلدیاتی نمائندے انتخابات کے بعد بھی بیوروکریسی کے رحم و کرم پر ہیں۔ درخواست گزار نے الزام عائد کیا ہے کہ بلدیاتی انتخابات کے بعد بھی بیوروکریسی ہی ترقیاتی سکیموں کی منظوری دے رہی ہے.

پنجاب کے بلدیاتی نمائندوں کو مکمل اختیارات دینے کا حکم دیا جائے، پنجاب حکومت کی طرف سے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل انوار حسین نے موقف اختیار کیا کہ بلدیاتی نمائندوں کو 2013 ءکے قانون کے مطابق اختیارات دیئے گئے ہیں، صرف ڈی سی او کا نام ڈپٹی کمشنر رکھنے سے نمائندوں کے اختیارات واپس نہیں ہوئے بلکہ بلدیاتی نمائندوں کو باقاعدہ بجٹ اور اختیارات دیئے گئے ہیںجس پرچیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ سننے میں تو یہی آ رہا ہے کہ بلدیاتی نمائندوں کے اختیارات محدود کئے گئے ہیں، اگر ایسا ہے تو کوئی نوٹیفکیشن، کوئی ترمیم تو حکومت نے کی ہوگی؟ درخواست پر مزید سماعت 17مئی کو ہو گی۔

مزید : لاہور