کشمیر تنازع کا پر امن حل ضروری لیکن مودی حکومت کبھی ایسا ہونے نہیں دے گی : عمران خان

کشمیر تنازع کا پر امن حل ضروری لیکن مودی حکومت کبھی ایسا ہونے نہیں دے گی : ...

  

لندن ،اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) چیئرمین پاکستان تحریک انصاف نے کہا ہے کشمیر کے تنازع کا پر امن حل ضروری ہے مگر مودی حکومت کبھی مسئلہ کشمیر حل نہیں کرے گی،اقوام متحدہ کی قرارداد کے مطابق کشمیریوں کو ان کا حق ملنا چاہئے، مقبوضہ کشمیر میں ظلم و بر بر یت جاری ہے جسے روکنا ہوگا ، کرپٹ سیاستدانوں کو باکسنگ رنگ میں عامر خان کے حوالے کروں گا،چیف جسٹس پاکستان کی سمت بالکل درست ہے اور وہ عام آدمی کے مسائل سن رہے ہیں، گزشتہ انتخابات میں دو جماعتوں کے مک مکا سے آنے والا نگراں سیٹ اپ صاف شفاف الیکشن نہیں کراسکا، اس بار ایسی حکومت آنی چاہیے جو منصفانہ انتخابات کراسکے،آصف زرداری اور نواز شریف سے اتحاد نہیں ہو گا،عوام کے ووٹ لے کر جنہوں نے خود کو نیلام کیا ہارس ٹریڈنگ کے اصل ذمہ دار وہ ہیں۔برطانیہ میں گزشتہ روز آل پارٹیز پارلیمنٹیرین سمیت مختلف تقاریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا پاکستان میں منی لانڈرنگ ایک بڑا مسئلہ ہے، پاکستان میں ادارے تباہ کرکے کرپشن کی راہ ہموار کی گئی، شریف خاندان نے ملک کا پیسہ لوٹ کر اپنی جائیداد بنائی، ملک جس صورتحال سے گزر رہا ہے اس کے ذمہ دار کرپٹ حکمران ہیں۔عمران خان نے کہا امریکا نے نائن الیون کے بعد افغانستان پر حملہ کیا،پاکستان نے افغان جنگ میں فرنٹ لائن سٹیٹ کا کردار ادا کیا، افغان جنگ سے پاکستان کو 100 ارب ڈالر کا نقصان ہوا ہے اور 70 ہزار جانیں ضائع ہوئیں، قبائلی عوام متاثر ہوئے، پاکستانی فورسز نے قبائلی علاقوں میں کنٹرول حاصل کیا۔انہوں نے کہا کہ امریکہ کیساتھ پاکستان کے تعلقات کو خوشگوار قرار دینا ممکن نہیں،وہ عالمی طاقت ضرور ہے مگر اسے پاکستان کے نقطہ نظر کو سمجھنا ہوگا۔عمران خان نے کہا کہ قرضے ملکی معیشت پر سب سے بڑا بوجھ ہیں،قرضوں کی ادائیگی کیلئے ہم نے خصوصی ٹاسک فورس تشکیل دی ہے، سمندر پار پاکستانیوں کو سرمایہ کاری کا معقول ماحول فراہم کیا گیا تو سی پیک سے بڑی سرمایہ کاری میسر آئے گی۔ عمران خان نے کہا کہ ایسی حکمرانی کا کیا فائدہ جس میں انسان اپنے ہی اداروں پر اعتماد نہ کرسکے ۔ اگر زکام بھی ہو تو طیارہ پکڑ کر باہر بھاگنے میں عافیت سمجھی جائے۔ چیف جسٹس پاکستان کی سمت بالکل درست ہے اور وہ عام آدمی کے مسائل سن رہے ہیں، ان کی خیبرپختونخو�آمد ہمارے لیے خوشی کا باعث ہے۔ پختونخوا میں افسر شاہی کی تقرریوں کی بنیاد اہلیت اور قابلیت ہے، چیف جسٹس نے بھی صوبائی انتظامیہ کی تعریف کی۔ چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ گزشتہ انتخابات میں دو جماعتوں کے مک مکا سے آنے والا نگراں سیٹ اپ صاف شفاف الیکشن نہیں کراسکا، اس بار ایسی حکومت آنی چاہیے جو منصفانہ انتخابات کراسکے۔ انہوں نے کہا کہ آصف زرداری اور نواز شریف سے اتحاد نہیں ہو گا، پیپلزپارٹی اور (ن) لیگ نے میثاق جمہوریت اور اٹھارھویں ترمیم کے تحت مک مکا کیا، نگراں حکومت اور الیکشن کمیشن میں مرضی کے لوگ لگائے۔عوام کے ووٹ لے کر جنہوں نے خود کو نیلام کیا ہارس ٹریڈنگ کے اصل ذمہ دار وہ ہیں جبکہ چوہدری سرور کو اپوزیشن اور تحریک انصاف میں شامل ہونے والے (ن) لیگ کے اراکین نے بھی ووٹ دیے۔عمران خان نے مزید کہا کہ ملک میں اشرافیہ اور عوام کے لیے الگ الگ تعلیمی نظام ہے، (ن) لیگ اور پیپلز پارٹی نے 20 سال میں ایسا اسپتال نہیں بنایا جہاں ان کے قائدین کا علاج ہو سکے۔

عمران خان

مزید :

صفحہ اول -