قصور کے 17ن لیگی ارکان 5روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

قصور کے 17ن لیگی ارکان 5روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

  

قصور(بیورورپورٹ)عدلیہ مخالف ریلی اور دیگر ادارو ں کیخلاف ہرزہ سرائی کرنے کیخلاف درج مقدمات میں دہشت گردی کی دفعات کا اضافہ کرکے قصور پولیس نے17ملزموں کوگرفتار کرکے انسداد دہشت گردی لاہور کی عدالت میں پیش کر دیا۔ عدالت نے ملزموں کو پانچ روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا ۔تفصیلات کے مطابق 13اپریل کو سپریم کورٹ کی جاب شے محفوظ فیصلہ سناتے ہوئے سابق وزیر ا عظم نوا ز شریف کو تاحیات نااہل کرنے پر قصور میں ارکان اسمبلی سمیت منتخب نمائندوں کی قیادت میں عدلیہ مخالف ریلی نکالی جو کشمیر چوک قصور میں احتجاج کی شکل اختیار کر گئی جس میں شرکاء نے عدلیہ اور حساس اداروں کیخلاف ہرزہ سرائی کی جس کا آئی جی پنجاب نے نوٹس لیتے ہوئے ملزموں کیخلاف کاروائی کا حکم دیا قصور پولیس نے ممبر قومی اسمبلی میاں وسیم اخترشیخ، ممبر صوبائی اسمبلی حاجی محمدنعیم صفدر انصاری، چےئرمین میونسپل کمیٹی قصور حاجی ایاز احمد خاں، چےئرمین ضلعی بیت المال قصور ناصر محمود خاں، وائس چےئرمین مارکیٹ کمیٹی جمیل احمد خاں سمیت 60نامعلوم افراد کیخلاف تھانہ اے ڈویژن پولیس نے دو الگ الگ مقدمات درج کر لیے تھے پولیس نے ارکان اسمبلی سمیت گرفتا ر ملز مو ں کو سول جج علاقہ مجسٹریٹ عادل سرور سیال کی عدالت میں پیش کیا تو عدالت نے ایک ایک لاکھ روپے مچلکے کے عوض ضمانتیں منظور کر لیں ۔ پولیس نے پراسیکیوشن کی مشاورت سے درج مقدمہ میں دہشت گردی کی دفعات کو شامل کرکے17ملزمان کو گرفتار کر لیا۔گزشتہ روز قصور پولیس نے انسداد دہشت گردی کے جج سجاد احمدکی عدالت میں پیش کر دیا عدالت نے ملزموں کو 5روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالہ کر دیا ۔ و اضح رہے گرفتار ملزموں میں کوئی منتخب نمائندہ شامل نہیں ہے۔

ریمانڈ

مزید :

صفحہ آخر -