12 سالہ لڑکے کی اپنے ماں باپ سے لڑائی، ناراض ہوکر ان کے پیسے چرائے اور ہزاروں میل دور کہاں جا پہنچا؟ جواب جان کر تمام والدین شدید پریشان ہوجائیں گے کیونکہ۔۔۔

12 سالہ لڑکے کی اپنے ماں باپ سے لڑائی، ناراض ہوکر ان کے پیسے چرائے اور ہزاروں ...
12 سالہ لڑکے کی اپنے ماں باپ سے لڑائی، ناراض ہوکر ان کے پیسے چرائے اور ہزاروں میل دور کہاں جا پہنچا؟ جواب جان کر تمام والدین شدید پریشان ہوجائیں گے کیونکہ۔۔۔

  

سڈنی(نیوز ڈیسک)کمسن بچے والدین سے لڑ کر کبھی کبھار گھر سے بھاگ جاتے ہیں۔ عام طور پر یہ بچے آس پاس کہیں عزیز رشتہ دار کے پاس چلے جاتے ہیں یا کوئی زیادہ دور بھی جاتا ہے تو دوسرے شہر پہنچ جاتا ہے مگر اس چھوٹو کو دیکھئے جو والدین سے ناراض ہو کر دوسرے ملک جا پہنچا۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

نیوز ویب سائٹ نائن نیوز کے مطابق 12 سال کے اس آسٹریلوی لڑکے کی اپنی والدہ سے لڑائی ہوئی جس پر وہ ناراض ہو کر گھر سے نکلا اور انڈونیشیاءکے تفریحی جزیرے بالی جا پہنچا۔ اس بچے نے اپنے والدین کے کریڈٹ کارڈ چرائے اور پھر اپنی معمر دادی کو چکر دے کر اس سے اپنا پاسپورٹ لے لیا۔ وہ ریل گاڑی کے ذریعے پہلے سڈنی گیا جہاں سے بذریعہ پرواز پرتھ گیا اور پھر بالی کے لئے اڑان بھر گیا۔

ڈریو نامی اس لڑکے سے جب پوچھا گیا کہ اس نے بیرون ملک سفر کس طرح کیا تو اس کا کہنا تھا کہ ”یہ کوئی مشکل کام نہیں۔ میں نے انٹرنیٹ پر سرچ کی تو مجھے پتا چلا کہ آسٹریلین ائرلائن 12 سال سے زائد عمر کے بچوں کو اکیلے سفر کی اجازت دیتی ہے اگر ان کے پاس سٹوڈنٹ آئی ڈی اور پاسپورٹ موجود ہو۔ ٹکٹ اور دیگر اخراجات کے لئے میرے پاس کریڈٹ کارڈ موجود تھے۔“

اس لڑکے کی چالاکی کا اندازہ کیجئے کہ بالی پہنچنے سے پہلے ہی اس نے مشہور آل سیزنز ہوٹل میں بکنگ بھی کروالی تھی۔ اس نے ہوٹل انتظامیہ کو بتایا کہ بعد ازاں اس کی بڑی بہن اس کے پاس پہنچ جائے گی لیکن چونکہ وہ پہلے پہنچ رہا ہے اس لئے ایڈوانس بکنگ کی ضرورت ہے۔ آسٹریلوی پولیس اور امیگریشن ڈیپارٹمنٹ کی کوششوں سے اسے چار دن بعد بالی سے واپس آسٹریلیا لایا جا سکا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -