ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی کو نجی لاء کالجز سے ٹیوشن فیس لینے سے روک دیا

ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی کو نجی لاء کالجز سے ٹیوشن فیس لینے سے روک دیا

  

لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی کونجی لاء کالجوں سے ٹیوشن فیس کادس فیصد حصہ وصول کرنے سے تاحکم ثانی روک دیا، جسٹس عاطر محمود نے اس سلسلے میں 17 پرائیویٹ لاء کالجز کی دائر درخواست پر پر نوٹس جاری کرتے ہوئے پنجاب یونیورسٹی سے جواب بھی طلب کرلیا۔درخواست گزاروں کی طرف سے پرائیویٹ لاء کالجز ایسوسی ایشن کے صدر صفدر شاہین پیرزادہ ایڈووکیٹ نے پیش ہوکر موقف اختیار کیا کہ پنجاب یونیورسٹی کو رجسٹریشن سمیت دیگر فیسیں ادا کر چکے ہیں، اب نجی لاء کالجوں سے ٹیوشن فیس کا دس فیصد وصول کرنے کا نوٹیفیکیشن جاری کردیا گیا ہے،پنجاب یونیورسٹی کے سنڈیکیٹ کو ٹیوشن فیس کی مد میں رقم وصولی اختیار نہیں، بچوں کو تعلیم پرائیویٹ لا کالجز دیتے ہیں تو ٹیوشن فیس پنجاب یونیورسٹی کو کیوں دیں، دیگر فیسوں کی موجودگی میں 10 فیصد ٹیوشن کی وصولی غیر آئینی اقدام ہے،پنجاب یونیورسٹی کی جانب سے جاری کیا گیاپرائیویٹ لاء کالجزسے10 فیصد ٹیوشن فیصد وصولی کا نوٹیفکیشن کالعدم قرار دیا جائے۔

ٹیوشن فیس

مزید :

صفحہ آخر -