نجی ملازمین کی برطرفیوں پر پنجاب حکومت سے جواب طلب

  نجی ملازمین کی برطرفیوں پر پنجاب حکومت سے جواب طلب

  

لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے کرونا وائرس اور لاک ڈاون کے دوران فیکٹریوں، کارخانوں اور پرائیویٹ اداروں سے لاکھوں ملازمین کی مبینہ برطرفیوں کے خلاف دائر درخواست پر پنجاب حکومت کو جامع جواب داخل کرانے کی ہدایت کردی، عدالت نے حکومت سے یہ استفساربھی کیا ہے کہ مزدوروں کے تحفظ کو یقینی بنانے کیلئے کیا اقدامات کئے گئے ہیں، جبکہ درخواست گزار کو ہدایت کی ہے کہ وہ ملازمت سے نکالے گئے مزدوروں کی فہرست پیش کریں۔چیف جسٹس محمد قاسم خان نے لیبر فیڈریشن کی درخواست پر سماعت کی، جس میں حکومت پنجاب، محکمہ صنعت و تجارت اور محکمہ لیبر سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے پیش نظر ملک بھر میں لاک ڈاؤن کیا گیا ہے، جس کی وجہ سے صنعتی اداروں اور کارخانہ مالکان نے مزدوروں کو ملازمت سے نکال دیا۔ پنجاب میں صنعتی اداروں نے مزدوروں کی تنخواہوں میں بھی کمی کر دی ہے جبکہ سندھ اور بلوچستان حکومتوں نے مزدوروں کی ملازمت بچانے کیلئے اقدامات کیے ہیں، استدعا ہے کہ عدالت حکومت پنجاب کو مزدوروں کی ملازمت پر بحالی کیلئے اقدامات کا حکم دے۔ پنجاب حکومت نے جواب جمع کرایا جس پر عدالت نے عدم اطمینان کا اظہار کیا اور 30 اپریل تک جامع جواب جمع کروانے کا حکم دے دیا۔

برطرفیاں

مزید :

صفحہ آخر -