لاک ڈاؤن، بعض پابند یاواقعی بہت سخت ہیں، آسٹر یلوی وزیر اعظم

  لاک ڈاؤن، بعض پابند یاواقعی بہت سخت ہیں، آسٹر یلوی وزیر اعظم

  

سڈنی (اے پی پی) آسٹریلوی وزیر اعظم سکاٹ موریسن مرنے والوں کی آخری رسومات اور ان میں شرکت کرنے والوں کی تعداد محدود کرنے کی پابندیوں کا ذکر کرتے ہوئے آبدیدہ ہو گئے۔سکائی نیوز کو ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ انہیں اپنی حکومت کی طرف سے کورونا وائرس کی وبا کے پس منظر میں عائد کردہ ان پابندیوں پر شدید دکھ ہے۔انہوں نے کہا کہ لاک ڈاؤن کے دوران عائد کی گئی بعض پابندیاں بہت ہی مشکل ہیں جن میں سے خاندان کے بزرگ افراد کو آئیسولیٹ کرنا خاص طور سے قابل ذکر ہے۔ ان پابندیوں کے تحت معصوم بچے اپنے دادی دادا اور نانی نانا سے نہیں مل سکتے اور نہ ہی وہ اپنے پوتوں پوتیوں اور نواسوں نواسیوں سے مل سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان کے نزدیک سب سے سخت پابندی یہ ہے کہ کسی مرنے والے کی آخری رسومات میں دس سے زیادہ افراد شریک نہیں ہوسکتے۔ لاک ڈاؤن کے دوران بہت سے لوگوں کا انتقال ہوا لیکن ان کے بہت سے رشتہ دار اور دوست اس پابندی کی وجہ سے اپنے پیاروں کی آخری رسومات میں بھی شریک نہ ہوسکے۔ سکائی نیوز کو انٹرویو میں اس موقع پر سکاٹ موریسن کی آنکھوں میں آنسو امڈ آئے اور انہوں نے کہا کہ یہ بہت ہی اندوہناک صورتحال ہے اور ہمیں اس موقع پر اچھے دنوں کی امید رکھنی چاہیے۔ واضح رہے کہ آسٹریلوی وزیر اعظم قبل ازیں یہ کہہ چکے ہیں کہ عالمی ادارہ صحت کی جگہ صحت کا کوئی ایسا نیا ادارہ قائم کیا جانا چاہیے۔

جس کے حکام کو جوہری توانائی کی بین الاقوامی ایجنسی آئی اے ای اے کی کے انسپکٹرز کی طرح مختلف ممالک کے ہسپتالوں اور وبائی امراض کے مراکز کا معائنہ کرنے کی اجازت ہو۔

مزید :

علاقائی -