پیپلز پارٹی کا حکومت سے کورونا ریلیف پیکیج پارلیمنٹ سے منظو رکرانے کا مطالبہ

  پیپلز پارٹی کا حکومت سے کورونا ریلیف پیکیج پارلیمنٹ سے منظو رکرانے کا ...

  

اسلام آباد (آئی این پی)پیپلزپارٹی پارٹی کی مرکزی سیکرٹری اطلاعات ڈاکٹر نفیسہ شاہ،ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات پلوشہ خان اور سینیٹر روبینہ خالد نے مطالبہ کیا ہے کہ پارلیمنٹ اجلاس بلاکر حکومت کی طرف سے دئیے جانے والے ریلیف پیکج کو منظور کرایاجائے ورنہ یہ پیکج غیر قانونی ہوگا کیونکہ اس کا بڑا حصہ روزانہ کے اخراجات میں استعمال کیا جا رہا ہے، پلوشہ خان نے کہا کہ وزیر اعظم کشکول لیکر بیٹھ گئے ہیں وہ یہ بتائیں کہ وہ 3سو کنال کے گھر میں رہتے ہیں۔ ان کے وزیروں مشیروں نے ریلیف فنڈ میں کتنا حصہ ڈالا ہے، رزاق داؤد،خسرو بختیار، عامر کیانی، مراد سعید، جہانگیر ترین، شیخ رشیدنے کیا دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ کہ وزیراعظم، صدر، وزراء اور مشیروں کے ٹی اے ڈی اے بند کر دیئے جائیں کیونکہ اس مشکل وقت میں عیاشیاں نہیں ہونی چاہیں، اور بتایا جائے کہ کرونا وائرس کے حوالے سے جو کمیٹی کام کررہی ہے وہ روزانہ کتنا ٹی اے ڈی اے لے رہی ہے۔ان کا مزید کہنا تھاکہ وزیراعظم اور ہیلتھ کے مشیر ظفر مرزا اب یہ کہہ رہے ہیں کہ لاک ڈون میں نرمی کی وجہ سے کیسوں میں اضافہ ہوا ہے جب تک لاک ڈون سخت نہیں کیا جائے گا اس وبا پر قابو پانا مشکل ہو جائیگا، پیپلزپارٹی پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹونے پہلے دن ہی کہاتھا کہ یہ وقت ملکر کام کرنے کا ہے ایسے وقت میں نفرتیں ختم ہونی چاہیں لیکن حکومت اپوزیشن سے لڑ رہی ہے۔

مطالبہ

مزید :

صفحہ آخر -