سندھ حکومت نے ایک بڑی بایو سیفٹی لیول lllبی ایس ایل lllلیبارٹری قائم کر دی

سندھ حکومت نے ایک بڑی بایو سیفٹی لیول lllبی ایس ایل lllلیبارٹری قائم کر دی

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ حکومت نے اپنے عزم اور کاوشوں سے جامع کراچی کے انٹرنیشنل سینٹر برائے کیمیکل اینڈ بایو لوجیکل سائنس میں ایک بڑی بایو سیفٹی لیولIII، بی ایس ایلIIIلیبارٹری قائم کی ہے جس کی جانچ کی صلاحیت 2400 روزانہ ہے۔اس بات کا انکشاف وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے جمعرات کو وزیراعلی ہاس سے جاری اپنے ویڈیو پیغام کے ذریعے کیا۔انہوں نے کہا کہ نیشنل انسٹیٹیوٹ آف ویرولاجی جامعہ کراچی کے انٹرنیشنل کیمیکل اینڈ بایولوجیکل سائنسز کے مرکز کے طور پر جانا جاتا ہے۔جسے کورونا وائرس 19کے ٹیسٹ کرنے کی سہولت میں تبدیل کر دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ اس مقصد کے لئے بی ایس ایل۔ III کو مکمل کیا گیا ہے اور ٹیسٹنگ مشین اور تربیت یافتہ عملہ کے ساتھ لیس ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ لیب کی ابتدائی صلاحیت روزانہ 800 نمونے جانچنے کی ہے اور تین ہفتوں کے اندر لیب کی گنجائش روزانہ 2400 ٹیسٹ کی ہوجائے گی۔وزیراعلی سندھ نے کہا کہ آر این اے ایکسٹریکشن اور آر ٹی۔پی سی آر کٹس پروفیسر ڈاکٹر اقبال چودھری جوکہ اس سینٹر کے ڈائریکٹر ہیں کوٹیسٹ شروع کرنے کے لیے مہیا کی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ نہ صرف ایک بڑی خبر ہے بلکہ ایک خوشخبری بھی ہے کہ بلآخر حکومت نے سرکاری شعبے میں سب سے بڑی جانچ کی سہولت قائم کردی ہے۔وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ مسلسل دوسرے دن کراچی میں خاص طور پر سماجی پھیلا کے زیادہ سے زیادہ کورونا وائرس کے کیسز سامنے آئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک تشویشناک بات ہے اور سخت اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔وزیراعلی سندھ نے کہا کہ آج 298 نئے کورونا وائرس کے کیسز آئے ہیں، اس حساب سے کل مریضوں کی تعداد 3671 ہوگئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کورونا وائرس کے باعث آج مزید 4 مریض انتقال کرگئے اور جاں بحق ہونے والوں کی تعداد 73 ہوگئی ہے جو کل مریضوں کا 1.98 فیصد ہے۔انہوں نے کہا کہ سندھ میں کل 2934 مریض زیرعلاج ہیں۔1871 مریض گھروں میں آئیسولیٹ ہیں، 640 آئیسولیشن مراکز اور 423 اسپتالوں میں زیرعلاج ہیں۔ وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ سندھ کے 298 نئے کیسز میں کراچی میں 202 اورر 96 دیگر اضلاع میں ہیں۔ضلع وسطی کراچی میں 29 نئے کیسز آئے ہیں، ضلع شرقی کراچی میں 25، ملیر میں 79، جنوبی کراچی میں 63 اورکراچی غربی میں 6 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔سکھر میں 20، شہید بینظیر آباد میں 8، لاڑکانہ میں 11، دادو میں 2، گھوٹکی اور سجاول میں ایک ایک کورونا کے کیس رپورٹ ہوئے ہیں۔تبلیغی جماعت کے 5102 لوگوں کے ٹیسٹ کیے گئے ہیں، تبلیغی جماعت کے لوگوں میں 764 افراد کی رپورٹمثبت آئی ہے، 17 کا نتیجہ آنا باقی ہے، تبلیغی جماعت کے 10 نئے کیسز سامنے آئے ہیں۔وزیراعلی سندھ نے کہا کہ بیرون ملک پھنسے ہوئے پاکستانی جوکہ واپس کراچی آئے ہیں ان کی تعداد 913 ہے اور ان سب کے ٹیسٹ کیے گئے،ان میں سے 98 مسافروں کے نتائج مثبت آئے اوریہ سب زیر علاج ہیں۔22 مریض رامادہ میں اور دیگر ایکسپوسینٹر اور ملیر میں زیر علاج ہیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -