وفاقی حکومت کا صحافیوں کو امدادی پیکیج دینے کا اعلان

وفاقی حکومت کا صحافیوں کو امدادی پیکیج دینے کا اعلان

  

اسلام آباد(آن لائن) وفاقی حکومت نے صحافیوں کو درپیش مشکلات کے پیش نظر قومی سطح پر ڈیٹا بیس بنانے اور امدادی پیکیج دینے کا اعلان کردیا،کورونا سے بچاؤ کیلئے صحافیوں حفاظتی کٹس کی فراہمی بھی جلد شروع ہوگی۔ میڈیا اداروں کو بقایاجات کا چیک تنخواہیں دینے کے چیک سے مشروط ملیں گے۔ پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن کے صدر بہزادسلیمی اور سیکرٹری اطلاعات علی شیر کی قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے اطلاعات و نشریات کے اجلاس میں شرکت کی۔ قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے پارلیمانی رپورٹرز ایسوسی ایشن کے صدر بہزاد سلیمی نے کہاکہ صحافیوں اور میڈیا ورکرز کرونا سے متاثر ہورہے ہیں، انہیں فی الفور حفاظتی کٹس فراہم کی جائیں اور متاثرہ صحافیوں کو شہداء پیکج کے مساوی پیکج دیا جائے۔ صحافتی اداروں کی بندش، کارکنوں کی تنخواہوں کی عدم اور کٹوتیاں ہمارے لیے باعث تشویش ہیں۔ صحافیوں کی تنخواہوں کا مسئلہ فوری حل کیا جائے۔ حکومت صحافتی اداروں کے واجبات کو کارکنوں کی تنخواہوں کء ادائیگی کا طریقہ کار طے کرکے جاری کرے۔ صحافتی اداروں کو واجبات صحافیوں کی تنخواہوں کی ادائیگی سے مشروط بنا کر ہی کی جائے گی۔ معاون خصوصی اطلاعات کی قائمہ کمیٹی کو یقین دہانی میڈیا اداروں کے بقایا جات جلد کلیئر کررہے ہیں۔ میڈیا اداروں کو بقایاجات کے چیک کارکنوں کی تنخواہوں کے بقایاجات کے چیک لے کر ہی دیں گے۔ میڈیا کارکنوں کے لئے جلد پیکیج لارہے ہیں۔ کرونا کوریج کرنے والے فیلڈ کارکنوں کو جلد حفاظتی کٹس فراہم کردی جائیں گی۔ میڈیا کارکنوں کو حفاظتی کٹس مرکز اور چاروں صوبوں کے وزرائے اطلاعات کے ذریعے دیں گے۔ حفاظتی کٹس این ڈی ایم اے سے لیکر دی جارہی ہیں۔ چیئرمین قائمہ کمیٹی اطلاعات نے میاں جاوید لطیف نے صحافیوں کی تنخواہوں اور دیگر مسائل کے حل کے لیے ذیلی کمیٹی قائم کردی قائمہ کمیٹی کی چیئرمین حکومتی رکن کنول شوذب ہوں گی۔

امداد کا اعلان

مزید :

پشاورصفحہ آخر -