کورونا کی صورتحال بد ستور سنگین، لاک ڈاؤ ن میں 15مئی تک توسیع کی تجویز پیش، جزوی لاک ڈاؤن میں ٹریفک کا بہاؤ 49فیصد تک پہنچ گیا 

کورونا کی صورتحال بد ستور سنگین، لاک ڈاؤ ن میں 15مئی تک توسیع کی تجویز پیش، ...

  

لاہور(لیاقت کھرل)کورونا کی صورتحال میں سنگینی برقرار، لاک ڈاؤن میں 15 مئی تک توسیع کی تجاویز پیش کر دی گئی، خفیہ اداروں اور محکمہ داخلہ پنجاب کی تیار کردہ رپورٹ میں پاکستانی طبی ماہرین اور چینی ڈاکٹرز کی رائے کو شامل کیا گیا، لاک ڈاؤن میں مرحلہ وار یا ایک ہی حکم نامے کے تحت توسیع کا فیصلہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کریں گے۔ روزنامہ پاکستان کو باخبر ذرائع سے معلوم ہے کہ حکومت کو جزوی لاک ڈاؤن 15 مئی تک بڑھانے کیساتھ ساتھ ایس اوپیز پر مزید سختی سے عملدرآمد کرانے کی تجویز دی گئی ہے۔ خفیہ اداروں اور محکمہ داخلہ پنجاب کی تیار کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ لاہور اور پنجاب سمیت ملک بھر میں کورونا وائرس کا پھیلاؤ بڑھ رہا ہے، جس کے تدارک کیلئے لاک ڈاؤن میں توسیع انتہائی ضروری ہے۔ خفیہ اداروں اور محکمہ داخلہ پنجاب نے اپنی رپورٹ میں پاکستان طبی ماہرین اور چینی ڈاکٹروں سے لی گئی رائے کا بھی ذکر کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق لاک ڈاؤن میں ممکنہ مزید توسیع کے بعد ہوٹلوں، مارکیٹوں اور پارکوں کو بند رکھنے کے حوالے سے بھی فیصلہ وزیر اعظم پاکستان کریں گے۔ 

تجویز پیش

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک)پنجاب میں جزوی لاک ڈاؤن کے دوران شہروں میں ٹریفک کا بہاؤ بڑھنے کے بارے میں رپورٹ وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار کو پیش کر دی گئی،  لاک ڈاؤن کے دوران سڑکوں پر ٹریفک کا بہاؤ 25 سے 49 فیصد تک جاپہنچا۔وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار کو اعلی سطح کے اجلاس میں پیش کی جانے والی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 22 مارچ سے ہونے والے پہلے لاک ڈاؤن میں شہروں میں ٹریفک 25 فیصد رہی، پہلے لاک ڈاؤن میں عوامی رسپانس اور عملدرآمد کا رزلٹ بہتر ہوا، پہلے لاک ڈاؤن میں عوام کی جانب سے سماجی فاصلے رکھنے کی پالیسی پر زیادہ عمل ہوا۔رپورٹ کے مطابق دوسرے جزوی لاک ڈاؤن میں ٹریفک کا بہاؤ 49 فیصد سے زائد جا پہنچا ہے، دوسرے جزوی لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کی شکایات بھی سامنے آئیں۔ وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار نے انتظامی آفیسرز کو ہدایت کی ہے کہ لاک ڈاؤن کے فیصلوں پر روح کے مطابق عمل کرایا جائے۔

لاک ڈاؤن رپورٹ

مزید :

صفحہ اول -