سپاٹ فکسنگ کے خاتمے کیلئے کھلاڑیوں کو کیا سزا دینی چاہئے؟ مدثر نذر نے مشورہ دیدیا

سپاٹ فکسنگ کے خاتمے کیلئے کھلاڑیوں کو کیا سزا دینی چاہئے؟ مدثر نذر نے مشورہ ...
سپاٹ فکسنگ کے خاتمے کیلئے کھلاڑیوں کو کیا سزا دینی چاہئے؟ مدثر نذر نے مشورہ دیدیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے سابق ٹیسٹ کرکٹر مدثر نذر نے سپاٹ فکسنگ کے خاتمے کیلئے تاحیات پابندی کو موثر حل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ نرم قوانین اور زیادہ لمبی سزا نہ ہونے سے کئی کرکٹرز دوبارہ کھیل میں واپس آ جاتے ہیں کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ پکڑے جانے پر سزا بھگت کر جلد موقع مل جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق اپنے انٹرویو میں مدثر نذر نے کہا کہ سخت قوانین بنا کر ہی سپاٹ فکسنگ جیسی برائی کو جڑ سے اکھاڑنے میں مدد مل سکتی ہے۔ نرم قوانین اور زیادہ لمبی سزا نہ ہونے سے کئی کرکٹرز دوبارہ کھیل میں واپس آجاتے ہیں کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ اگر پکڑے گئے تو سزا بھگت کر دوبارہ جلد موقع ملے گا اس لئے تاحیات پابندی ہی زیادہ موزوں ہوسکتی ہے۔

بند دروازوں کے پیچھے کرکٹ سرگرمیاں شروع کرنے سے متعلق سوال پر ان کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس کی اس صورت حال میں اگر ایسا ہو سکتا ہے تو یہ اچھا آپشن ہوگا، یہ ایک مشکل صورت حال ضرور ہو گی لیکن اس کے علاوہ کوئی اور حل دکھائی نہیں دے رہا، خالی سٹیڈیمز میں میچز ہونے سے ٹی وی رائٹس سے کرکٹ بورڈ کو پیسے ملنا شروع ہوں گے، گزشتہ ماہ ٹی وی پر فٹ بال میچز دیکھے ہیں جہاں تماشائی موجود نہیں تھے اور یہ ایک تکلیف دہ صورت حال تھی۔

گولڈن آرم کا خطاب رکھنے والے مدثر نذر نے واضح کیا کہ ڈائریکٹر گیمز ڈویلپمنٹ کے طور پر پی سی بی کے ساتھ 31 مئی کو معاہدہ ختم ہورہا ہے، اس کے بعد انگلینڈ میں کوچنگ یا پھر ذاتی کاروبار کرنے کے آپشنز موجود ہیں، میرے نزدیک پاکستان کرکٹ کو ٹھیک کرنے کیلئے کلب، سٹی اور اضلاع کی کرکٹ کو بہتر کرنا بہت ضروری ہے۔

مزید :

کھیل -