بھارت تنازعہ کشمیر کا پرامن حل نہیں چاہتا، سید علی گیلانی، میر واعظ

بھارت تنازعہ کشمیر کا پرامن حل نہیں چاہتا، سید علی گیلانی، میر واعظ

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیر میں حریت رہنماؤں نے پاکستان اور بھارت کے درمیان قومی سلامتی کے مشیروں کی سطح کے مذاکرات کی منسوخی کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت تنازعہ کشمیر کو پرامن طریقے سے حل کرنے میں سنجیدہ نہیں۔ کشمیر میڈیاسروس کے مطابق بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی نے سرینگر میں ایک میڈیا انٹریو میں کہا کہ بات چیت کی منسوخی سے ان کا یہ موقف درست ثابت ہوا ہے کہ بھارت تنازعہ کشمیر کا پر امن حل نہیں چاہتا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے ایک مرتبہ پھر ہٹ دھرمی کی راہ اپناتے ہوئے مذاکرات سے فرار حاصل کیا ہے ۔ سید علی گیلانی نے کہا کہ اگر بھارت تنازعہ کشمیر کے حل اور امن عمل کو آگے بڑھانے میں سنجیدہ ہوتا تو وہ حریت رہنماؤں کے ساتھ پاکستان کی بات چیت سے پریشان نہیں ہوتا۔ بزرگ رہنما نے کہا کہ کشمیری حق خود ارادیت کے حصول کی جد وجہد مقصد کے حصول تک ہر قیمت پر جاری رکھیں گے۔ کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق نے بات چیت کی منسوخی کو ایک بڑا سیٹ بیک قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر ی دونوں ملکوں کے درمیان بطور ایک پل کا کردار ادا کرنا چاہتے ہیں لیکن بدقسمتی سے بھارت انہیں دوست نہیں دشمن سمجھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے انتہائی ناروا رویہ اپنا رکھا ہے۔ جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک نے ایک بیان میں کہا کہ بات چیت کی معطلی حیران کن ہرگز نہیں۔ انہو ں نے کہا دونوں ملک بات چیت کرتے ہیں یا نہیں ، تاہم کشمیری اپنی آزادی تک جدوجہد جاری رکھیں گے۔

مزید : عالمی منظر