معروف نوجوان یورپی ماڈل اسلام قبول کرکے داعش میں شامل ہوگئی، یہ کون ہے اور پولیس نے تلاشی لی تو پاس سے کیا چیز مل گئی؟ ایسا انکشاف کہ ہنگامہ برپاہوگیا

معروف نوجوان یورپی ماڈل اسلام قبول کرکے داعش میں شامل ہوگئی، یہ کون ہے اور ...
معروف نوجوان یورپی ماڈل اسلام قبول کرکے داعش میں شامل ہوگئی، یہ کون ہے اور پولیس نے تلاشی لی تو پاس سے کیا چیز مل گئی؟ ایسا انکشاف کہ ہنگامہ برپاہوگیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) مغربی ممالک سے نوجوان لڑکیوں کی بڑی تعداد شدت پسند تنظیم داعش میں شامل ہوئی ہے لیکن پہلی بار ایک ایسی مشہور ماڈل کی داعش میں شمولیت کا انکشاف ہوا ہے کہ جان کر ہر کوئی دنگ رہ گیا ہے۔

ویب سائٹ ’بیوٹی پیجنٹس‘ کی رپورٹ کے مطابق یہ 26 سالہ معروف ماڈل لتیشیا ہے، جس کا تعلق کارسٹلانو لی لیز کے علاقے سے ہے۔ وہ مس کارنن 2014ءمقابلہ حسن میں دوسرے نمبر پر آئی تھی اور کئی بڑی کمپنیوں کے لئے بھی ماڈلنگ کر چکی ہے۔ وہ نہ صرف خود داعش کا حصہ بن چکی تھی بلکہ دوسری لڑکیوں کو بھی اس تنظیم میں شامل کرنے کیلئے کوشاں تھی۔ پولیس نے جب اس کے فلیٹ کی تلاشی لی تو متعدد رسالے اور کتب برآمد ہوئے جن کا تعلق داعش سے ہے اور ان کے ذریعے داعش کے پیغام کی تشہیر مقصود تھی۔

جسم فروش خاتون کے ساتھ گزارے گئے لمحات کیلئے 58 کروڑ روپے کی ادائیگی، آدمی نے ایسا کام کردیا کہ جان کر ہی تمام مَردوں کو دن میں تارے نظر آجائیں

لتیشیا کے فیس بک پیج سے پتہ چلتا ہے کہ اس نے گزشتہ سال اسلام قبول کیا اور پھر داعش میں شامل ہو گئی۔ وہ سوشل میڈیا پر ’کنزہ‘ کا نام استعمال کرتی تھی اور سوشل میڈیا کے ذریعے ہی دیگر خواتین اور لڑکیوں کو داعش کیلئے بھرتی کرنے کیلئے کوشاں تھی۔ اس کی والدہ کا کہنا ہے کہ وہ 2013ءمیں بے تحاشہ شراب نوشی اور دیگر منشیات استعمال کرنے لگی تھی۔ انہی دنوں سوشل میڈیا پر داعش کے کسی کارندے سے اس کی ملاقات ہوئی اور وہ اس تنظیم کی جانب مائل ہوگئی۔ وہ تنزانیہ سے تعلق رکھنے والے ایک شدت پسند کے ساتھ رابطے میں تھی اور شام جاکر اس سے شادی کرنے کی خواہشمند بھی تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس