پی سی ایم اے نے محفوظ پیداوار اور ترسیل کیلئے وزارت ماحولیات کیساتھ کام شروع کردیا

پی سی ایم اے نے محفوظ پیداوار اور ترسیل کیلئے وزارت ماحولیات کیساتھ کام شروع ...

لاہور (کامرس رپورٹر)پاکستان کیمیکل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (پی سی ایم اے) نے کیمکلز کی محفوظ پیداوار اور ترسیل سے متعلق اقوام متحدہ کے 9 نئے معاہدوں پر عملدرآمد کیلئے منسٹری آف کلائمیٹ چینج کے ساتھ ملکر کام شروع کر دیا ہے۔متذکرہ وزارت کی طرف سے جوائینٹ سیکرٹری افتخار الحسن شاہ گیلانی اور ڈپٹی ڈائریکٹر کیمیکل ڈاکٹر ضیغم عباس کو پی سی ایم اے کے ساتھ مسلسل رابطہ کیلئے نامزد کیاگیا ہے۔دونوں افسران نے پی سی ایم اے کے صدر دفتر کا دورہ کر کے 9 معاہدوں کی فہرست اور ان سے متعلقہ دستاویزات پی سی ایم اے کو پیش کیں۔ان معاہدوں میں مہلک کیمیائی مواد کی بین السرحدی ٹرانسپورٹ اور اس کے ضیاع سے متعلق بیسل کونشن، سٹاک ہوم کنونشن، روٹرڈم کنونشن، مونٹریال پروٹوکول، میناماتا کنونشن، کیمیکل مینجمنٹ کی انٹرنیشنل حکمت عملی کا معاہدہ، کیمیائی تجارت کے دوطرفہ اور کثیرالطرفین معاہدوں کی افہام و تفہیم کی شرائط،جوائینٹ منسٹریل کمشن کی شرائط اور یورپی یونین کی جی ایس پی سکیم کی حفاظتی شرائط شامل ہیں۔

منسٹری آف کلائمیٹ چینج کے جوائینٹ سیکرٹری افتخارالحسن شاہ گیلانی نے اس موقع پر اپنے خیالا ت اظہار کرتے ہوئے کہا کہ متذکرہ عالمی معاہدوں کی شرائط اور معیارات پر عملدرآمد سے پاکستان کی کیمیکل انڈسٹری با آسانی دنیا بھر میں اپناکاروبار پھیلا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان معاہدوں پر عملدرآمد کو یقینی بنانے کیلئے انکی وزارت پی سی ایم اے کے ساتھ ہر ممکن تعاون جاری رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے ترقی یافتہ ملکوں میں نافذالعمل بہترین طریقہ ہائے کار کے بارے میں متعارف کروانے کیلئے بھی انکی وزارت بھرپورکوششیں کرے گی۔ قبل ازیں پی سی ایم اے کے سیکرٹری جنرل اقبال قدوائی نے منسٹری آف کلائمیٹ چینج کے حکام کو بتا یا کہ پاکستان کے کیمکل مینوفیکچررز ، کیمیائی مواد کی تیاری اور ترسیل کے عالمی معیارات کا نہ صرف بھرپور ادراک رکھتے ہیں بلکہ اپنے اپنے کارخانوں میں مقررہ معیاروں کے مطابق حفاظتی تدابیر بھی اختیار کئے ہوئے ہیں جبکہ کیمیکلزکی بحفاظت ترسیل کے حوالے سے مقررہ عالمی زمہ داریوں کو پورا کرنے کیلئے پی ایس ایم اے انہییں کیمیکل مینوفیکچررز ایسوسی ایشنوں کی عالمی فیڈریشن کی زیر نگرانی بین الااقوامی ریسپونسبل کیئر پروگرام کے بارے میں بھی آگاہی دے رہی ہے اور پی سی ایم اے کی متعدد ممبران ، ریسپونسبل کیئر کے عالمی پروگرام پر علمدرآمد کے تصدیقی سرٹیفکیٹ بھی حاصل کر چکے ہیں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ پاکستان کی کیمیکل انڈسٹری خود کو عالمی کیمیکل انڈسٹر ی کا فعال حصہ بنانے کیلئے تمام تر نئے معیاروں پر بھی عملدرآمد کرنے کو تیار ہے۔ ا س سلسلے میں انہوں نے یقینی دہانی کرائی کہ یو این او کے تحت ہونے والے ۹ ماحولیاتی معاہدوں کی شرائط اور معیارات پر عملدرآمد کیلئے منسٹری آف کلائمیٹ چینج کے ساتھ بھرپور تعاون کیا جائے گا۔تاہم انہوں نے منسٹری سے درخواست کی کہ پاکستان کی کیمیکل انڈسٹر ی کو ترقی یافتہ ممالک کے ہم پلہ لانے کیلئے عالمی معیارات پر عملدرآمد کے ساتھ ساتھ ، نیفتھا کریکر کمپلیکس کی تعمیرکے حوالے سے کیمکل انڈسٹری کے دیرینہ مطالبے کی تکمیل میں بھی مدد کی جانی چاہیے۔

مزید : کامرس