صوبائی دارالحکومت میں ملیریا،ڈینگی اور کانگو کے بعد سوائن فلو بھی سامنے آ گیا

صوبائی دارالحکومت میں ملیریا،ڈینگی اور کانگو کے بعد سوائن فلو بھی سامنے آ ...

لاہور(جنرل رپورٹر) ملیریا،ڈینگی اور کانگو کے بعد سوائن فلو بھی سامنے آ گیا ، 2017 کے پہلے سوائن فلو کے مریض کی تصدیق بھی ہو گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق بھاٹی گیٹ کے رہائشی 35 سالہ عمران صلاح الدین کو سوائن فلو کی علامات ظاہر ہونے پر ڈاکٹرز ہسپتال میں داخل کیا گیا اور اس کے ٹیسٹ قومی ادارہ صحت اسلام آباد کو بھجوائے گئے، این آئی ایچ کی جانب سے تصدیق کی گئی ہے کہ عمران صلاح الدین سو ا ئن فلو میں مبتلا ہے، تاہم مریض کی حالت خطرے سے باہر ہے۔ لاہور میں سوائن فلو کے حملے کی تصدیق کے بعد محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ نے تمام ہسپتالوں کو الرٹ جاری کردیاہے۔اس موقع پر ڈی ڈی او رروای ٹاؤن ڈاکٹر سرفراز نے بتایا سوائن فلو کی علامات باقی وائر سز کی طرح ہیں، یہ ایک سے دوسرے فرد میں منتقل ہوتاہے اسلئے مریض کو اکیلا رکھا جانا ضروری ہے اور مریض سے ملنے کے بعد ہاتھ باقا عد گی سے دھوئے جائیں، جبکہ ضلعی شعبہ صحت کے سربراہ سی ای او ڈاکٹر سید اختر گھمن کا کہنا ہے امسال سوائن فلو کے چالیس مشتبہ کیسز سا منے آچکے ہیں جن میں سے صرف اس ایک مریض کو سوائن فلو لاحق ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔ سوائن فلو کا کیس سامنے آنے کے بعد ضلعی شعبہ صحت نے بھاٹی کے علاقے میں سوائن فلو سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر سے آگاہی کی مہم شروع کر دی ہے، ممتاز ماہر صحت پروفیسر ڈاکٹر فیصل مسعود سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا سوائن فلو سانس کی نالی میں خرابی کی بیماری ہے اور اس کا وائرس جانوروں سے انسانوں میں منتقل ہوتا ہے، اس جان لیوا بیماری میں مبتلا افراد کے چھینکنے اور کھانسنے سے یہ وائرس کسی بھی دوسرے انسان کو منتقل ہوسکتا ہے،تاہم یہ قابل علاج مرض ہے ۔

سوائن فلو

مزید : صفحہ آخر