سانحہ ماڈل ٹاؤن عدالتی ٹربیونل کی رپورٹ منظر عام پر لانے کیلئے متاثرین نے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر لیا

سانحہ ماڈل ٹاؤن عدالتی ٹربیونل کی رپورٹ منظر عام پر لانے کیلئے متاثرین نے ...

لاہور(نامہ نگارخصوصی)سانحہ ماڈل ٹاؤن عدالتی ٹربیونل کی رپورٹ کی معلومات منظر عام پر لانے کے لئے سانحہ ماڈل ٹاون کے متاثرین نے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر لیاہے۔قیصر اقبال ،امجد اقبال اور محمد اویس سمیت 20متاثرین نے بیرسٹر علی ظفر ایڈووکیٹ کی وساطت سے درخواست دائر کی ہے جس میں حکومت پنجاب کو فریق بناتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ماڈل ٹاون انکوائری رپورٹ منظر عام پر آنے سے ذمہ داروں کا تعین ہو گا،انکوائری رپورٹ منظر عام پر لا کر مقتولین کے ورثا کو جلد انصاف کی فراہمی کا عمل ممکن بنایا جا سکتا ہے۔معلومات تک رسائی کے قانون کے تحت کسی شہری کو بھی معلومات کی فراہمی سے نہیں روکا جا سکتا، انفارمیشن کمشنر کی عدم تعیناتی کی بناء پر سانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ فراہم نہیں کی جا رہی، انصاف کی فراہمی میں تاخیر آئین کی روح کے خلاف ہے،ماڈل ٹاؤن عدالتی انکوائری رپورٹ منظر عام پر لانے کی متعدد درخواستیں لاہور ہائیکورٹ میں پہلے سے ہی زیر سماعت ہیں۔ہائیکورٹ کے فل بنچ نے کئی ماہ سے ان درخواستوں پر سماعت نہیں کی ،سماعت نہ ہونے سے 3برسوں سے ماڈل ٹاؤن انکوائری رپورٹ منظر عام پر لانے کی درخواستوں پرفیصلہ نہیں ہوسکا ہے،درخواستوں پر جلد فیصلہ نہ ہونے سے ذمہ داروں کو فائدہ ہو رہا ہے۔درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ عدالت سانحہ ماڈل ٹاؤن کے عدالتی ٹربیونل کی رپورٹ متاثرین کو فراہم کرنے اور منظر عام پر لانے کے احکامات صادر کرے۔

مزید : صفحہ آخر