مسلم لیگ (ن) کا مشاورتی اجلاس ، نااہلی کی مدت کے تعین کیلئے آرٹیکل 62ون ایف میں ترمیم کا فیصلہ

مسلم لیگ (ن) کا مشاورتی اجلاس ، نااہلی کی مدت کے تعین کیلئے آرٹیکل 62ون ایف میں ...

 لاہور(این این آئی،آن لائن )مسلم لیگ (ن) کا اہم مشاورتی اجلاس جاتی امراء رائیونڈ میں منعقدہوا جس میں آرٹیکل 62،63میں ترمیم،قانونی معاملات ، نیب کیسز ، پارٹی کے موقف سمیت آئندہ کے لائحہ عمل بارے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ۔اجلا س میں فیصلہ ہوا ہے کہ جلد از جلد پارلیمانی جماعتوں کے پارلیمانی رہنماؤں سے رابط کرکے آئین کے آرٹیکل 62ون ایف میں ترامیم کرکے نااہلی کی مدت کو5سال سے کم تک محدود کیا جائے۔ اجلاس میں سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف ، گورنر سندھ محمد زبیر ، وفاقی وزیر قانون زاہد حامد، وفاقی وزیر ریلویز خواجہ سعد رفیق، وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب ،سینیٹر پرویز رشید،عرفان صدیقی ، صوبائی وزیر قانون رانا ثنا اللہ خان، رانا مقبول، خواجہ حارث ،بیرسٹر امجد پرویز ، طاہر پرویز سمیت دیگر نے شرکت کی ۔بتایاگیا ہے کہ طویل مشاورتی اجلاس میں موجودہ حالات میں پارٹی کی سطح پر موقف کے حوالے سے تمام رہنماؤں کو بریفنگ دی گئی ۔اجلاس میں نیب کیسز اور نیب کی کارروائی بارے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا جبکہ لیگل ٹیم نے قانونی نکات پر اجلاس کے شرکاء کو تفصیلی بریفنگ دی ۔ اس موقع پر پارٹی کے آئندہ کے لائحہ عمل بارے بھی غوروخوض کیا گیا اور اس کیلئے آئند ہ بھی مشاورت کا سلسلہ جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا ۔آرٹیکل 62ون ایف میں جلد از جلد ترامیم کی جائے اور یہ اس وقت ممکن ہے جب حکومت ایوان بالا اور ایوان زیریں میں شقوں میں تبدیلی کے حوالے سے دو تہائی اکثریت حاصل کریگی اس حوالے سے اجلاس میں کہا گیا کہ جلد از جلد پارلیمانی جماعتوں کے پارلیمانی رہنماؤں سے ملاقاتوں کی کوششیں تیز کی جائے اور انہیں اعتماد میں لیا جائے تاکہ آئین کے آرٹیکل 62ون ایف کی شق میں ترمیم کرکے نااہلی کی مدت کو5سال سے کم تک محدود کیا جائے اور دیگر جماعتوں کو اس حوالے سے بھی اعتماد میں لیا جائے کہ آرٹیکل 62میں جو اسلامی مواد ہے اس کو نہیں چھیڑا جائے گا اور صرف 62ون ایف میں ترمیم کی جائے گی ۔ ذرائع کے مطابق اجلاس میں شرکت کرنے والے تمام رہنماؤں نے سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف سے بیگم کلثوم نواز کی صحت بارے آگاہی حاصل کی اور ان کی جلد صحت یابی کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا ۔

مسلم لیگ ن کا اجلاس

مزید : صفحہ اول