پارلیمنٹ جب تک بحیثیت ادارہ مضبوط نہیں ہو گی ریاست کمزور رہے گی :رضا ربانی

پارلیمنٹ جب تک بحیثیت ادارہ مضبوط نہیں ہو گی ریاست کمزور رہے گی :رضا ربانی

اسلام آباد (این این آئی)چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے کہا ہے کہ جب تک پارلیمینٹ بحیثیت ادارہ مضبوط نہیں ہوگی ریاست کمزور رہے گی، سینیٹ میں آئندہ رہوں یا نہ رہوں آئین کے تحت ایوان بالا کو جومقام حاصل ہے اس کیلئے جدوجہد کرتا رہوں گا۔ سینیٹ کی نئی لائبریری کی گزشتہ روز افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے میاں رضا ربانی نے کہاکہ لائبریری کی توسیع میں سینیٹر مشاہد حسین سید ، سینیٹر نزہت صادق ، سینیٹر کریم احمد واجہ، ثمینہ سعید وغیرہ پر مشتمل لائبریری کمیٹی نے اس منصوبہ کو پایہ تکمیل تک پہنچانے میں اہم کردار ادا کیا ہے جبکہ لائبریری کے توسیعی منصوبہ کے لئے یو این ڈی پی، یو کے ایڈ، نسٹ یونیورسٹی کے طلباء و اساتذہ اور سینیٹ سیکرٹریٹ کے عملہ کا کردار خاص طورپر قابل تعریف ہے۔انہوں نے کہاکہ بطور چیئرمین سینیٹ میں نے ہمیشہ کوشش کی ہے کہ چیئرمین کو حاصل تمام صوابدیدی اختیارات ختم کئے جائیں اور ایوان کی کمیٹیوں کے ذریعے اجتماعی فیصلے کئے جائیں، اس کے پیچھے صرف ایک ہی مقصد تھا کہ افراد آتے جاتے رہتے ہیں ، اداروں نے ہمیشہ کیلئے قائم رہنا ہے۔ قبل ازیں چیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی نے پارلیمینٹ میں سینیٹ کی نئی لائبریری کا سینیٹ میں قائد ایوان راجہ محمد ظفر الحق ، ڈپٹی چیئرمین سینیٹ مولانا عبدالغفور حیدری اور دیگر ارکان پارلیمنٹ کے ہمراہ افتتاح کیا اور لائبریری کا دورہ کیا ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی چیئرمین سینٹ مولانا غفور حیدری نے کہا کہ گلی دستور، شہداء کی یادگار کی تعمیر اور اب نئی لائبریری کا قیام چیئرمین سینٹ میاں رضا ربانی کی قیادت میں ایک اہم اور لائق تحسین کارنامہ ہے، علمی ذوق و شوق سے ہی ایسے کام کئے جا سکتے ہیں۔سینٹ میں قائد حزب اختلاف سینیٹر چوہدری اعتزاز احسن نے کہا کہ اگرچہ اب انٹرنیٹ پر بھی کتابیں پڑھی جا سکتی ہیں تاہم یہ قاری اور کتاب کے درمیان رشتے کا نعم البدل کبھی ثابت نہیں ہو سکتا۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں جدید دنیا کے ساتھ قدم سے قدم ملا کر جدید تحقیق پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

رضا ربانی

مزید : کراچی صفحہ اول