خیبر ایجنسی ،ہیڈ کوارٹر ہسپتال لنڈی کوتل کی نجکاری کا فیصلہ

خیبر ایجنسی ،ہیڈ کوارٹر ہسپتال لنڈی کوتل کی نجکاری کا فیصلہ

خیبر ایجنسی (بیورورپورٹ)ایجنسی ہیڈکوارٹر ہسپتال لنڈیکوتل کی پرائیویٹائزیشن کا فیصلہ ہو چکا ہے اگلے ہفتے ہسپتال کو این جی او کے حوالے کیا جائیگا بار بار عوام کی شکایات پر محکمہ صحت کے اعلی حکام نے پرائیویٹائزیشن کا فیصلہ کیا گیا پرائیویٹائزیشن سے عوام کو بہتر ین طبی سہولیات گھر کے دہلیز پر میسر ہو نگے ہسپتال کو پرائیویٹایزیشن کے بعد سٹاف کو فارغ نہیں کیا جائیگا بلکہ سٹاف کوڈیوٹی پر پابند کیا جائیگا ان خیالات کا اظہار ڈائیر یکٹر ہیلتھ فاٹاڈاکٹر جوادحبیب نے انٹریوکے دوران کیا گیا انہوں نے کہا کہ ڈینگی بیماری کے حوالے سستی سے کام نہیں لے گے اور اس میں کسی قسم کی لاپرواہی برادشت نہیں کی جائیگی فاٹامیں خیبر ایجنسی جمرود اور باڑہ اور گز شتہ روز باجوڑ ایجنسی سے دو کیسیز رپورٹ ہو گئی ہیں باجوڑ ایجنسی سے رپورٹ کئے گئے مریضوں کو دیکھتے ہیں کہ وہ باہر سے آئے ہیں یا باجوڑ میں ڈینگی جراثیم موجود ہیں ڈاکٹر جواد حبیب نے کہا کہ محکمہ صحت کی ٹیمیں پورے فاٹامیں دورے کر رہے ہیں اور اس کے ساتھ فوگ اسپرے بھی کئے جا رہے ہیں لیکن ڈینگی کے حوالے سے لوگوں میں شعور بیدار کرنے کی ضرورت ہیں اس کیلئے بھی وہ مختلف ایجنسیوں میں کام کر رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ڈینگی کے ساتھ کانگو کی بیماری جو جانوروں میں پائی جاتی ہیں اس پر بھی انکے میڈیکل ٹیمیں کا م کر رہے ہیں کیونکہ عید الضحی کے موقع پر مختلف علاقوں سے جانور لائے جاتے ہیں اس کیلئے بھی اسپرے کا بندوبست کیا گیا ہے جو مویشیوں منڈیوں میں کیا جائیگاانٹریو کے دوران ڈائیر یکٹر ہیلتھ جواد حبیب نے ایجنسی ہیڈ کوارٹر ہسپتال لنڈیکوتل میں بجلی میٹرائیزیشن کے حوالے سے کہا کہ صرف لنڈیکوتل ہسپتال میں میٹرائیزیشن نہیں کی گئی بلکہ انہوں ٹیسکو چیف کو دراخوست بھیج دی ہے کہ پورے فاٹا کے ہیڈ کوارٹرزہسپتالوں میں بجلی میٹر ز لگا دئیے جائے انہوں نے فاٹا ہسپتالوں میں اسپشلسٹ پوسٹوں کی خالی اسامیوں کے حوالے بتایا کہ اسپشلسٹ ڈاکٹروں کی تعیناتی خیبر پختونخوا حکومت کا کام ہیں انہوں نے بار بار اسپشلسٹ ڈاکٹروں کی خالی پوسٹوں پر تعیناتی کیلئے پختونخوا حکومت کو درخواستیں بھیج دی ہیں لیکن فاٹا میں کوئی اسپشلسٹ ڈاکٹر کام دیوٹی کرنے کیلئے تیار نہیں ہیں کیونکہ فاٹا میں اسپشلسٹ ڈاکٹر کو 75000تنخواہ دی جاتی ہیں ا ور دوسرے علاقوں میں اسپشلسٹ ڈاکٹر تقریبا 145000تنخواہ دی جاتی ہیں آخر میں انہوں نے کہاکہ محکمہ صحت نے سوچ سمجھ اور عوام کو بہترین طبی سہولیات مہیا کرنے پر ایجنسی ہیڈ کوارٹر ہسپتال کو پرائیویٹائز یشن کا فیصلہ کیا گیا ہے

 

مزید : کراچی صفحہ اول