توہین عدالت کیس ، وکلاء کی ہڑتال ، ملتان میں احتجاجی ریلی ، نعرے بازی

توہین عدالت کیس ، وکلاء کی ہڑتال ، ملتان میں احتجاجی ریلی ، نعرے بازی

ملتان ، خانیوال، میلسی، مظفر گڑھ (خبر نگار خصوصی، نمائندگان) توہین عدالت کیس میں صدر ہائیکورٹ بار ملتان شیر زمان قریشی کے وارنٹ گرفتاری اور لاہور میں وکلاء پر تشدد کیخلاف ملتان (بقیہ نمبر24صفحہ12پر )

سمیت مختلف شہروں میں وکلانے ہڑتال کی ڈسٹرکٹ بار ہال سے چوک تک احتجاجی ریلی نکالی گئیں تفصیل کے مطابق ہائیکورٹ وڈسٹرکٹ بارایسوسی ایشنز ملتان کی جانب سے آج 31ویں روز بھی ہڑتال جبکہ عیدالاضحٰی کی آمد کے باعث 11 بجے صبح کے بعد ہڑتال جاری رکھنے اورتوہین عدالت کیس کے ساتھ ضلع لودھراں اورساہیوال کے متعلق نوٹیفکیشن کی واپسی تک تحریک ختم نہ کرنیکا اعلان کیاگیاہے اور لاہور سمیت پورے پاکستان کے وکلاء کو تحریک کو موثر بنانے کیلئے خراج تحسین بھی پیش کیا گیا ہے۔ اس ضمن میں گزشتہ روز30 ویں دن بھی مکمل ہڑتال کی گئی اور وکلاء مقدمات کی پیروی کے لئے عدالتوں میں پیش نہ ہوئے ڈسٹرکٹ بار ہال میں مشترکہ اجلاس منعقد ہوا جس کے بعد وکلاء کی جانب سے چوک کچہری تک احتجاجی ریلی نکالی گئی اورنعرے بھی لگائے گئے۔ لا ہور میں 21 اگست کو ریلی میں شامل ہونے وکلاء اجلاس میں پہنچے تو شرکاء نے زبردست انداز میں والہانہ استقبال کیااور ہال کافی دیر تک نعروں سے گونجتا رہا۔ وکلاء کا مشترکہ اجلاس ملتان بار ہا ل میں ہوا جس سے خطاب کرتے ہوے ملتان بار کے صدر ایم یوسف زبیر نے کہا کہ وہ لاہور اور پنجاب کے وکلاء کے شکر گزار ہیں جنہوں نے 21 اگست کو موثر کردار ادا کرکے تحریک میں جان ڈالی،انہوں نے کہا کہ توہین عدالت کے الزام میں ملوث وکلاء آج مختلف فورم پر تحریک کو بدنام کر رہے ہیں اور جنرل سیکرٹری ہائیکورٹ کا اختلاف معمولی ہے جو جلد دور کر لیا جائے گا۔قائم مقام صدرہائیکورٹ بار فیروزہ فیض نے کہاکہ ہائیکورٹ بارکی پوری ایگزیکٹوباڈی بھرپورطریقے سے صدرشیرزمان کے ساتھ ہے اور ان کی جانب سے شروع کی گئی تحریک کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔ اجلاس سے ممبران پنجاب بار میں جاوید ہاشمی نے کہا کہ پنجاب بار میں ہائیکورٹ نے صدر شیرزمان قریشی اور قیصر عباس کاظمی کے لائسنس کی معطلی کی کاروائی بھجوائی ہے جو ملتان بار سے تعلق رکھنے والے عزیز خان پنیاں اورداؤد احمد وینس کے دائرہ اختیار میں ہے لہذا اسے فوری منسوخ کیا جائے،جعفر طیار بخاری نے کہا آئندہ اجلاس سڑکوں پر منعقد کرینگے،خواجہ قیصر بٹ نے کہا کہ لاہور میں سادہ کپڑوں میں ملبوس اہلکاروں نے تشدد کے ذریعے وکلاء تحریک کو سبوتاز کرنے کی کوشش کو دوستوں نے ناکام بنادیا،داؤد احمد وینس نے کہا کہ ہائیکورٹ کی جانب سے صدر و دیگر کے لائسنس منسوخی کارؤائی بھجوائی ہے جو مسترد کر دی جائے گی،اجلاس سے سابق صدور میں اطہر شاہ بخاری نے کہا کہ احتجاج میں شائستگی اختیار کرنا ضروری ہے،محمود اشرف خان نے کہا کہ شیر زمان قریشی کی گرفتاری کے احکامات کو ہر حال میں ناکام بنائیں گے کہ وکلاء اپنی جان ومال کی قربانی دے کرعدلیہ بحال کراسکتے ہیں تو اپنے حق کیلئے کسی بھی حدتک جاسکتے ہیں۔ اجلاس سے انیس مہدی،شہزاد بلوچ، شیخ محمد فہیم،عبدالرزاق ڈوگر، شاہد چاون،چوہدری دلدار،اقبال مہدی،سلطان میرانی،ذیشان مسعود،نشید عارف گوندل،وسیم ممتاز،چوہدری راشدنے بھی خطاب کیا۔قبل ازیں لاہور میں 21 اگست کو ریلی میں شامل ہونے وکلاء اجلاس میں میمونہ نقوی اہلیہ شیرزمان قریشی کی قیادت میں پہنچے تو شرکاء نے زبردست انداز میں والہانہ استقبال کیااور ہال کافی دیر تک نعروں سے گونجتا رہا۔اجلاس کے آخر میں عید کی وجہ سے ہڑتال میں نرمی کرتے ہوئے روزانہ دن گیارہ بجے کے بعد ہڑتال کا اعلان کیا گیا اور روزانہ ملتان بار ہال میں اجلاس و ریلی کا فیصلہ کیا گیا،اجلاس میں وکلاء عاصمہ جہانگیر،سلمان اکرم راجہ اور علی ظفر کے داخلے پر پابندی کا اعلان کیا گیابعد ازاں وکلاء نے بازوؤں پر سیاہ پٹیاں باندھ کراور سیاہ جھنڈے اٹھاکر کچہری چوک تک ریلی نکالی اور نعرے بازی کی۔،اجلاس کی صدارت ہائیکورٹ کی نائب صدر فیروزہ فیض نے کی۔ خانیوال سے بیورو نیوز کے مطابق ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے زیراہتمام ملتان ہائی کورٹ بار کو یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے اور لاہور میں وکلاء تشد د کے خلاف گزشتہ روز بھی بار میں مکمل ہڑتال کی گئی اس موقع پر کوئی وکیل کسی عدالت میں پیش نہیں ہوا ڈسٹرکٹ بار کے صدر چوہدری عمر چیمہ ،جنرل سیکرٹری راجہ سہیل ظفر ،رانا ضیاء الرحمن اور دیگر وکلاء نے اس عظم کا اظہار کا کہ چیف جسٹس منصور شاہ کی فراغت تک وکلاء کا احتجاج جاری رہے گا ۔ میلسی سے نمائندہ پاکستان کے مطابق میلسی بار نے بدھ کے روز بھی مکمل ہڑتال کی وکلاء احتجاجاً عدالتوں میں پیش نہیں ہوئے سائلین کو بھی پریشان کا سامنا رہا او رکئی مقدمات کی سماعت التواء میں رہی ۔ مظفر گڑھ سے نامہ نگار کے مطابق ڈسٹرکٹ بار مظفرگڑھ نے ہائیکورٹ بار ملتان کے صدر شیر زمان کی گرفتاری کے احکامات جاری کرنے اور پولیس چھاپوں کیخلاف بدھ کے روز بھی فل ڈے ہڑتال کی ۔وکلاء نے بازوں پر سیاہ پٹیاں باندھ احتجاج کیا ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر