8ماہ میں 15لائن مینوں، پرائیویٹ الیکٹریشنوں کی ہلاکت ، میپکو ٹاپ پر آگئی

8ماہ میں 15لائن مینوں، پرائیویٹ الیکٹریشنوں کی ہلاکت ، میپکو ٹاپ پر آگئی

ملتان (سٹاف رپورٹر)لائن مینوں کی ہلاکتوں میں میپکو ’’ٹاپ پوزیشن ‘‘ پر آگئی۔ افسروں نے غفلت اور نا اہلی کے ’’ریکارڈتوڑ دئیے‘‘ میپکو ریجن میں کرنٹ لگنے سے لائن مینوں کی ہلاکتوں میں اضافہ ہونے سے متاثرہ خاندان برباد ہو گئے ۔ذرائع کے مطابق حادثات میں ہلاکتوں کی تعداد کے (بقیہ نمبر17صفحہ12پر )

حوالے سے بھی میپکو کمپنی پہلے نمبر پر ہے۔یکم جنوری سے اب تک 15سے زائد لائن مین و پرائیویٹ الیکٹریشن کرنٹ لگنے سے جاں بحق ہو چکے ہیں۔پرائیویٹ الیکٹریشنز کی ہلاکت پر جھوٹ بولا جاتا ہے کہ اہل علاقہ نے خودہی پرائیویٹ افراد کو بلایا تھا۔ ملازمین سے سیفٹی کے بغیر 11 کے وی فیڈرز پر کام کروانے سے ہونے والی ہلاکتوں پر انتظامیہ متعلقہ ایس ڈی او اور لائن سپرٹینڈنٹ کو معطل کردیتی ہے جو دوسے تین ماہ بعد خاموشی سے بحال کردئیے جاتے ہیں۔ حادثاتی موت پر کمپنی ورثاء کو 25 لاکھ روپے کا چیک اور ایک قریبی رشتہ دار کو ملازمت کی فراہمی کرکے خاموشی اختیار کرلیتی ہے۔ لیکن ملازم کی حادثاتی موت پر کسی بھی افسر کو سزا نہیں دی جاتی ہے اور آپریشنل افسر اور دیگر سٹاف کو بچا لیا جاتاہے جبکہ پرائیویٹ الیکٹریشنز کی ہلاکت پر اس کے ورثا کو ایک پائی بھی ادا نہیں کی جاتی۔ اس حوالے سے دوغلی پالیسی اختیار کی جا رہی ہے ۔ ایک طرف سیفٹی سیمینار زمیں افسران سیفٹی کے متعلق زوردار خطاب کرتے ہیں تو دوسری طرف اس حوالے سے شدید غفلت اور لاپروائی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر