لنڈی کوتل بازار میں مسائل کے حل کیلئے جمعیت کا احتجاجی کیمپ

لنڈی کوتل بازار میں مسائل کے حل کیلئے جمعیت کا احتجاجی کیمپ

خیبرایجنسی (بیورورپورٹ)لندیکوتل بازار باچہ خان چوک میں لنڈیکوتل کے مسائل پر جمیعت علماء اسلام نے دو روزہ احتجاجی کیمپ لگا دیا کیمپ میں مختلف سیاسی پارٹیوں اور فلاحی تنظیموں کے رہنماوں سمیت سینکڑوں کی تعداد میں عام لوگوں نے شر کت کی احتجاجی کیمپ سے خطاب کر تے ہوئے جمیعت علماء اسلام فاٹا کے جنرل سیکرٹری مفتی اعجاز شنواری ،سماجی کارکن حاجی فضل الرحمن آفریدی ،عبدالرازق شنواری ،مقتدر شاہ ،حضرت ولی آفریدی معراج الدین ،ملک ماصل خان اور مولانا تحسین اللہ نے کہا کہ پانی کی قلت کی وجہ سے لنڈیکوتل کربلا کا منظر پیش کر رہے ہیں لوگوں کو پینے کی صاف پانی میسر نہیں ہے اس لئے شلمان واٹر سپلا ئی پر جلد ازجلد کام شروع کیا جائے مشکلات اور مسائل میں روز بروز اضافہ ہو تا جا رہا ہیں لیکن کسی کو کئی پروا نہیں ہیں انہوں نے کہا کہ طورخم بارڈرپر سختی سے ہزاروں مقامی لوگ بے روز گار ہو گئے ہیں حکومت کا کام ہیں کہ لوگوں کو روز گار فراہم کریں نہ کے اس سے روز گا رچھیننا جا ئے مقامی قبائل کو طورخم گیٹ پر پاسپورٹ کی شرط سے مثتثنی کیا جائے مقررین نے کہا کہ عید الضحی میں کچھ ہی دن باقی ہیں اور قربانی کی جانوروں پر لنڈیکوتل لے جانے پر پابندی لگا دی ہے اس سے اور بڑ اظلم کیا ہو سکتا ہے پابندی فوری طور پر ختم کریں تاکہ لوگ سنت ابراہیمی کیلئے بر وقت جانور خرید لیں انہوں نے کہا کہ لنڈیکوتل میں چوبیس گھنٹوں میں صر ف دو گھنٹوں کیلئے بجلی آتی ہیں اور وہ بھی رات کے وقت جس سے گھریلوں ضروریات پو رے نہیں ہو تی کم سے کم معاہدے کے تحت چھ گھنٹے بجلی دی جائے تا کہ پانی کی ضرورت پو ری ہوسکے جمیعت علماء اسلام فاٹاکے جنرل سیکرٹری مفتی اعجاز شنواری نے دھمکی دی کہ اگر انکے مطالبات تسلیم نہیں کئے گئے اور مسائل حل کیلئے سنجیدگی سے کوشش شروع نہیں کئے گئے تووہ پلان بی اور سی کے مطابق پاک افغان شاہراہ کو ہر قسم آمدورفت کیلئے بند کر دینگے جس کی تمام تر ذمہ داری حکومت پر عائد ہو گی

مزید : پشاورصفحہ آخر