ضلع کونسل شانگلہ نے غیر ترقیاتی بجٹ میں بھاری کٹوتی کرکے بجٹ منظور کرلیا

ضلع کونسل شانگلہ نے غیر ترقیاتی بجٹ میں بھاری کٹوتی کرکے بجٹ منظور کرلیا

الپوری (ڈسٹرکٹ رپورٹر) شانگلہ میں ضلعی محکموں کی ناقص کارکردگی ،ضلع کونسل شانگلہ نے سرکاری محکموں کے غیرترقیاتی بجٹ میں بھاری کٹوتی کر کے غیر ترقیاتی بجٹ کی منظوری دے دی۔غیر ترقیاتی بجٹ کی آڑ میں کسی بھی محکمے کو عیاشی نہیں کرنے دیں گے،شانگلہ کے پیسے شانگلہ پر ہی لگے گے۔ضلع ناظم نے ناظم اور ضلع نائب ناظم کیلئے نئی گاڑیوں کی خریداری کیلئے رکھے گئے 80 لاکھ سے شانگلہ کیلئے بلڈوزر اور ٹریکٹرز خریدنے کا اعلان کردیا۔اجلاس کے دوران اے این پی کے دو ضلعی کونسلرز کے درمیان تلخ کلامی اور ہاتھاپائی کونسل کے غیر ترقیاتی بجٹ اجلاس سپیکر کامران اقبال کی زیر صدارت گزشتہ روز کالج ایڈیٹوریم ہال میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں ضلع ناظم نیاز احمد خان نے اراکین ضلع کونسل سے طویل مشاورت کے بعد محکموں کی ناقص کارکردگی کی بناء پر ان کی جانب سے جمع کئے گئے بجٹ تجاویز پر بھاری کٹ لگا دی غیرترقیاتی بجٹ میں سب سے زیادہ کٹوتی ڈپٹی کمشنر،محکمہ تعلیم،محکمہ صحت، اور محکمہ پاپولیشن سے کی گئی ۔ضلع کونسل میں موجود24اراکین نے 13کروڑ اٹھ لاکھ انچاس ہزار روپے کے غیر ترقیاتی بجٹ کی منظوری دیدی۔جبکہ عوامی نیشنل پارٹی کے ضلعی کونسل میں اپوزیشن لیڈر حاجی سدیدالرحمن ،اراکین ضلع کونسل الطاف حسین گلاب شاہ پوری اور اسلام محمد نے رائے شماری میں حصہ نہیں لیا ۔اس دورا ن عوامی نیشنل پارٹی کے دو ضلع اراکین الطاف حسین گلاب شاہ پوری اور ذاکراللہ خان برپورن کے درمیان تلخ کلامی اور ہاتھاپائی بھی ہوئی تاہم باقی اراکین نے بیچ بچاؤ کرکے معاملہ رفع دفع کردیا۔ غیر ترقیاتی بجٹ پر بحث میں عوامی نیشنل پارٹی کے اپوزیشن لیڈر حاجی سدیدالرحمن ۔شیرعلی خان چکیسر۔شیرین زادہ۔سرفراز خان۔شمس الرحمن۔الطاف حسین گلاب شاہ پوری۔عطاء اللہ خان۔حاجی سلطان نبی ۔انتخاب عالم ۔ذاکراللہ خان۔جمشید علی۔ضیاء الحق اور دیگر نے حصہ لیا اور ضلعی محکوں کی کارکردگی پر گرما گرم بحث کیا،بعض اراکین ضلع کونسل نے اپنے خطاب میں ضلعی محکموں کی غیر ترقیاتی بجٹ پر بھاری کٹ کی مخالفت کی تو بعض نے ان کو سراہا ۔ غیرترقیاتی بجٹ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ضلع ناظم شانگلہ نیاز احمد خان نے کہا کہ ضلع ناظم اورضلع نائب ناظم کیلئے نئی گاڑیوں کی خریداری کیلئے رکھے گئے 80 لاکھ روپے رکھے گئے تھے اس سے محکمہ بلدیات شانگلہ کیلئے بلڈوزر ،ٹریکٹرز خریدے جائیں گے جس سے ضلع کا فائدہ ہوگا۔محکموں کی بجٹ پر جو کٹ لگایا گیا ہے اس کو احسن طریقے سے خرچ کریں گے اور جن محکموں کی کارکردگی بہتر ہوئی انہیں زیادہ فنڈ دیا جائے گا۔ضلع ناظم نے کہا کہ سرکاری محکموں کے افسران شانگلہ سے مخلص نہیں ہوں گے تو انہیں فنڈز بھی نہیں ملیں گے ۔انہوں نے کہا کہ شانگلہ کی ترقی اور خوشحالی کیلئے آخری حد تک جائیں گے ،پورا کونسل میرا ساتھ دے تو شانگلہ کو ماڈل ضلع بنائے گے جس کا سہرا پورا ضلع کونسل کو جائے گا۔سپیکر نے نان سیلری بجٹ ایوان سے منظور ہونے کے بعد اجلاس غیرمعینہ مدت تک ملتوی کردیا۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر