میکلوڈ گنج، ساہیوال: پولیس اہلکاروں کی اپنے ہی تھانے میں کام کرنیوالے بچے سے اجتماعی زیادتی

میکلوڈ گنج، ساہیوال: پولیس اہلکاروں کی اپنے ہی تھانے میں کام کرنیوالے بچے سے ...
میکلوڈ گنج، ساہیوال: پولیس اہلکاروں کی اپنے ہی تھانے میں کام کرنیوالے بچے سے اجتماعی زیادتی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

میکلوڈ گنج, ساہیوال (ویب ڈیسک) 2 پولیس اہلکاروں نے اپنے ہی تھانے میں کام کرنیوالے 12سالہ محنت کش کو شراب پلاکر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ میکلوڈگنج پولیس کے دو اہلکار عبدالرحمن نوناری اور عبدالغفور وسند نے اپنے ہی تھانہ میں کام کرنے والے علی کو گشت کے بہانے اپنے ساتھ رکھا‘ رات دو بجے کے قریب ریاض کے گھر لے گئے‘ خود بھی شراب پی لی اور زبردستی علی کو شراب پلا دی اور باری باری زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا اور دھمکیاں دیں کہ اپنے والدین کو بتایا تو جان سے مار دیں گے۔ علی نے دس، بارہ روز نہیں بتایا تاہم گزشتہ روز اپنے والد جان محمد اور چچا کو اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی اور دھمکیوں کے متعلق بتا دیا جس پر درخواست بھی پولیس سٹیشن دیدیں جس پر کارروائی کرتے نشے کی حالت میں گزشتہ رات چھاپہ مار کر عبدالرحمن نوناری اور عبدالغفور کو شراب کے ساتھ پکڑ کر حوالات میں بند کر دیا ابھی تک کارروائی نہیں کی جا رہی۔ میڈیا کو بھی فوٹیج بنانے سے بھی روکدیا‘ والد جان محمد اور چچا نے بتایا کہ پولیس اہلکاروں کے خلاف درخواست دی مگر پولیس کارروائی نہیں کر رہی بلکہ ہمیں ڈرا دھمکایا جا رہا ہے۔ علی نے مزید کہا اگر مجھے انصاف نہ ملا تو خودکشی کر لوں گا۔ ساہیوال چک نمبر 132/9ایل میں حسنین وغیرہ پانچ ملزمان نے صغریٰ بی بی بیٹی سدرہ کو کھیتوں میں جاتی کو دبوچ لیا اور فصلوں میں لے جاکر ملزم سلطان عرف طاہر نے اس سے زیادتی کر ڈالی۔

مزید : جرم و انصاف