لاہور ہائی کورٹ نے میڈیکل انٹری ٹیسٹ کے نتائج تاحکم ثانی روکنے کا حکم دے دیا ،پنجاب حکومت اور ہیلتھ یونیورسٹی سے 13ستمبر تک جواب طلب کر لیا

لاہور ہائی کورٹ نے میڈیکل انٹری ٹیسٹ کے نتائج تاحکم ثانی روکنے کا حکم دے دیا ...
لاہور ہائی کورٹ نے میڈیکل انٹری ٹیسٹ کے نتائج تاحکم ثانی روکنے کا حکم دے دیا ،پنجاب حکومت اور ہیلتھ یونیورسٹی سے 13ستمبر تک جواب طلب کر لیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)لاہور ہائی کورٹ نے میڈیکل کالجز کے انٹری ٹیسٹ کا پرچہ مبینہ طور پر آؤٹ ہونے پر نتائج پرعملدرآمد روکنے کا حکم دے دیا ، میڈیکل کے انٹری ٹیسٹ کا پرچہ مبینہ طور پر آؤٹ ہونے کے خلاف 11 درخواست گزار طالبات  نے ہائی کورٹ سے رجوع کیاتھا۔

 تفصیلات کے مطابق لاہورہائی کورٹ میں میڈیکل کالجز میں انٹری ٹیسٹ کے پیپرز آؤٹ ہونے کے کیس کی سماعت ہوئی ، جسٹس شاہد وحید نے کیس کی سماعت کی،اس موقع پر 11 درخواست گزار طالبات نے اپنے وکلا کی وساطت سے  موقف اختیار کیا کہ میڈیکل انٹری ٹیسٹ کے پیپرز ایک دن پہے ہی لیک ہوچکے تھے، لہذا انٹری ٹیسٹ نتائج کو کالعدم قراردیا جائے، لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس شاہد وحید نے میڈیکل کالجز کے انٹری ٹیسٹ کا پرچہ مبینہ طور پر آؤٹ ہونے پر نتائج پرعملدرآمد روکنے کا حکم دے دیا ،درخواست گزاروں کا موقف تھا کہ داخلہ ٹیسٹ کا پیپر آؤٹ ہو چکا تھا اور لاہور کی اکیڈمی کے طلبا کے پاس پیپر ایک روز پہلے سے موجود تھا۔لاہور ہائیکورٹ نے  انٹری ٹیسٹ کے نتائج پر عملدرآمد روکنے کا حکم دیتے ہوئے پنجاب حکومت اور یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز سے 13ستمبر تک جواب طلب کر لیا ہے ۔

وفاقی حکومت نے عید الاضحی کے موقع پر کالعدم تنظیموں کے کھالیں جمع کرنے پر پابندی عائد کردی

واضح رہے گزشتہ روز میڈیکل انٹری ٹیسٹ کا پرچہ مبینہ طور پر آوٹ ہونے کے خلاف متاثرہ طلبہ و طالبات نے اپنے والدین کے ہمراہ لاہور پریس کلب کے سامنے احتجاج کیا تھا ،والدین اور طلبا کا کہنا تھا کہ وزیراعلی پنجاب ، چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ ، وزیر صحت خواجہ سلمان رفیق اور چئیرمین ہائیر ایجوکیشن فوری طور پر انکوائری کا حکم صادر کریں جو بھی لوگ اس معاملےمیں شریک ہیں ان کو سخت سے سخت سزا دی جائے اور ہزاروں بچوں کے مستقبل کو بچایا جائے اور دوبارہ ٹیسٹ لیا جائے۔والدین کا کہنا تھا کہ آج وہ بچے جن کی بہترین پوزیشنز ہیں، جنہوں نے میٹرک اور انٹر میں 95.97 سے زائد مارکس لئے ہیں ، وہ ہزاروں بچے اپنے ساتھ ہونے والی سنگین نا انصافی پر مایوس اور تعلیمی نظام سے بد دل ہو رہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ میڈیکل انٹری ٹیسٹ میں 65 ہزار بچوں نے حصہ لیا جبکہ پورے پنجاب میں 34ہزار سیٹیں خالی تھیں۔جس پر میاں شہباز شریف نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے انکوائری کمیٹی بھی تشکیل دی تھی جو 72 گھنٹے کے اندر رپورٹ وزیراعلیٰ کو پیش کرے گی۔وزیر اعلیٰ پنجاب کی طرف سے قائم کی گئی کمیٹی میں  ایڈیشنل چیف سیکریٹری ،ایڈیشنل آئی جی سپیشل برانچ، پروفیسر ڈاکٹر عیس محمد، ڈائریکٹرایف آئی اے لاہور، ڈائریکٹر جنرل پی ایف ایس اے لاہوراور سی ایم آئی ٹی کا ایک ممبر شامل ہوگا، کمیٹی کی رپورٹ پیش ہونے کے بعد اولین ترجیح میں مزید کارروائی کی جائے گی۔یاد رہے کہ پنجاب کے میڈیکل کالجز میں داخلے کے لیے انٹری ٹیسٹ20 اگست کو صوبے بھرمیں ہواتھاجس میں 65  ہزارطلبا و طالبات نے  شرکت کی تھی 

مزید : لاہور