امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے ،ہم پر جنگ تھوپی گئی تو اسے نئی دہلی جا کرختم کریں گے:ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان

امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے ،ہم پر جنگ تھوپی گئی تو اسے نئی دہلی جا ...
 امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے ،ہم پر جنگ تھوپی گئی تو اسے نئی دہلی جا کرختم کریں گے:ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان

  


لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہوزیراعظم عمران خان باربار دنیا کو مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کی جانب متوجہ کر رہے ہیں، بدقسمتی سے کچھ مسلمان ممالک کشمیر کا زخم محسوس نہیں کر رہے، ان کے اپنے معاشی مفادات ہیں، امن کی خواہش کو ہماری کمزوری سمجھا گیا،بھارتی وزیر دفاع راج ناتھ کو پیغام دیتے ہیں حضور جنگ شروع آپ نے کرنی ہے ختم ہم کریں گے،جنگ ہم پر تھوپی گئی تو نئی دہلی میں جا کراسے ختم کریں گے۔

گورنر ہاؤس لاہور میں چوہدری محمد سرور کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ جسم کے ایک حصے میں درد ہو تو پورا جسم محسوس کرتا ہے، اسلام کہتا ہے مسلمان آپس میں بھائی بھائی ہیں، وزیراعظم عمران خان باربار دنیا کو مقبوضہ کشمیر میں نسل کشی کی جانب متوجہ کر رہے ہیں، بدقسمتی سے کچھ مسلمان ممالک کشمیر کا زخم محسوس نہیں کر رہے، ان کے اپنے معاشی مفادات ہیں، دنیا اس وقت خواب خرگوش میں مبتلا ہے، انسانی حقوق کے چیمپئین ممالک کو مسلسل کشمیر کی صورتحال باور کرانے کی ضرورت ہے،انسانی حقوق کے عالمی ادارے مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر آواز کیوں نہیں اٹھا رہے؟۔انہوں نے کہا کہ مودی سرکار نے اقوام متحدہ کی 11 قراردادوں کو پاؤں تلے روند دیا، اس کے ساتھ ہمارا کوئی ذاتی جھگڑا نہیں، ہم چاہتے ہیں کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں قتل عام بند کرے، بہادر کشمیری بھارتی سنگینوں کی پرواہ نہ کرتے ہوئے اپنا بنیادی حق مانگ رہے ہیں،بھارتی وزیر دفاعراجناتھ سنگھ کے غیر ذمہ دارانہ بیانات کی سخت مذمت کرتے ہیں، راج ناتھ کو پیغام دیتے ہیں حضور جنگ شروع آپ نے کرنی ہے ختم ہم کریں گے،جنگ ہم پر تھوپی گئی تو نئی دہلی میں جا کرجنگ ختم کریں گے، امن کی خواہش کو ہماری کمزوری سمجھا گیا،بھارت جب تک مقبوضہ کشمیر میں مظالم بند نہیں کرے گا ہم مذاکرات نہیں کرینگے،مسئلہ کشمیر کی صورتحال ایک مذہب کا نہیں انسانیت کا مسئلہ ہے

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ ملک میں اقلیتوں کے مقدس مقامات ہمارے لیے نہایت قابل احترام ہیں، حکومت سکھوں کا رشتہ ان کے مذہبی مقامات سے مضبوط کرے گی،حالات کیسے بھی ہوں حکومت ان کے ساتھ ہو گی، پاکستان سکھوں کے مذہبی حقوق کو تسلیم کرتا ہے، مذہبی مقامات پر آنا ان کا مذہبی، قانونی اور اخلاقی حق ہے، کرتارپورپہنچنا سکھوں کا خواب تھا جسے ہم پورا کر رہے ہیں لیکن دوسری جانب بھارت سکھوں کو ان کا بنیادی حق دینے سے گریزاں ہے۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ وادی کا 20دن سے دنیا سے رابطہ منقطع ہے،بھارت مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشتگردی کر رہا ہے، حکومت کشمیریوں سے یکجہتی کا دن منائے گی،وزیراعظم کی سربراہی میں کشمیر پر فوکل گروپ بھرپور کام کر رہا ہے، کشمیریوں سے یکجہتی کیلئے مختلف تقریبات ہو رہی ہیں،پوری قوم کشمیر میں بھارتی مظالم کیخلاف احتجاج کر رہی ہے، پاکستان بھر میں اقلیتوں نے مظلوم کشمیریوں کے ساتھ یکجہتی دکھائی ہے،کشمیر میں مواصلاتی نظام بند اور عالمی صحافیوں پر پابندی ہے، وزیراعظم بھی آئندہ ہفتے قوم سے خطاب کریں گے۔انہوں نے کہا کہ سرسبز پاکستان پروگرام وزیراعظم عمران خان کا انقلابی پروگرام ہے،دنیا کا سب سے بڑا چیلنج عالمی حدت میں اضافہ ہے،سرسبز پاکستان کی کامیابی میں پوری قوم بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہی ہے،ملک بھر میں 192 مقامات پر شہریوں کو مفت پودے فراہم کیے جا رہے ہیں۔

مزید : قومی


loading...