اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ میں ترمیم فٹیف کی سفارشات کے مطابق کی گئی: شہزاد اکبر 

اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ میں ترمیم فٹیف کی سفارشات کے مطابق کی گئی: شہزاد اکبر 

  

  اسلام آباد(آئی این پی) وزیراعظم عمران خان کے مشیر برائے احتساب و داخلہ امور شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ احسن اقبال  نے اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ میں ترمیم  پر قوم کو گمراہ کیا ہے،اپنے لیڈرز کو بچانے کے لیے ملکی مفاد کا سودا کرنا درست نہیں شہزاد اکبر نے واضح کیا کہ منی لانڈرنگ کی سزا پانچ سال  سے بڑھا کر دس سال کی جا رہی ہے، منی لانڈرنگ پر جرمانے میں بھی اضافہ کیا جا رہا ہے،    اتوار کو سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کردہ اپنے ایک ویڈیو بیان میں شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ احسن اقبال جھوٹ بول رہے ہیں احسن اقبال کو ترمیم سے متعلق پتہ ہی  نہیں ہے۔وزیراعظم کے مشیر برائے احتساب و داخلہ امور شہزاد اکبر کاکہنا تھاکہ  اینٹی منی لانڈرنگ ایکٹ میں ترامیم فیٹف سفارشات کے مطابق ہیں،قوانین میں اینٹی منی لانڈرنگ سے متعلق خامیاں دورکی جارہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ نیب کی جانب سے منی لانڈرنگ کی تفتیش پراپوزیشن کواعتراض ہے(ن) لیگ چاہتی ہے کہ اینٹی منی لانڈرنگ سے نیب کو نکال دیا جائے۔وزیراعظم کے مشیر برائے احتساب و داخلہ شہزاد اکبرنے اپنے ویڈیو پیغام میں کہا ہے کہ یہ ہے وہ این آراو جو مانگ رہے ہیں لیکن وہ کسی صورت نہیں ملے گا۔احسن اقبال نے ایک بار پھر قوم کو گمراہ کرنے کی کوشش کی، اسمبلی میں شق وار مذاکرہ کر لیں  پوری قوم جان لے گی سچ کیا ہے اصل ایشو نیب اور آپکی ذاتی منی لانڈرنگ ہے۔ شہزاد اکبرنے واضح کیا ہے کہ قوانین میں اینٹی منی لانڈرنگ سے متعلق خامیاں دورکی جارہی ہیں۔شہزاد اکبر نے گزشتہ روز پریس کانفرنس کے دوران ’محکمہزراعت‘ کا ذکر کرنے پر معافی مانگ لی۔گزشتہ روز شہزاد اکبر نے پریس کانفرنس کے دوران صحافی کے سابق وزیرنواز شریف کو این آر او دینے سے متعلق سوال پر کہا تھا کہ ’این آر او کی جو بات کررہے ہیں تو دیکھیں دو چیزیں ہیں، جہاں تک مریم نواز کا تعلق ہے کہ تو ہمارے معاشرے کا ایک کلچر ہے چاہے وہ کے پی ہو، پنجاب ہو، سندھ ہو سب کا کہ بہو بیٹیوں کو بڑی عزت دی جاتی ہے اور کوشش کی جاتی ہے کہ ان کے نام کریمنل کیسز کے اندر نہ آئیں، شاید وہی جو چیز ہوگی‘۔انہوں نے پھر کہ کہا کہ ’باقی جو دوسرا آپ کا سوال ہے وہ ’محکمہزراعت‘ سے رابطہ کریں‘۔ اس پر ہال میں قہقہے گونجے تو مشیر داخلہ نے بھی مسکراتے ہوئے کہا کہ ’وہی والا‘۔اب اس بیان پر وزیراعظم کے مشیر برائے احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ ان کے بیان سے قومی سلامتی کے اداروں سے متعلق کوئی غلط تاثر پیدا ہوا ہے تو وہ بے بنیاد اور حقیقت سے عاری ہے اور کسی ادارے یا شخص کی دل آزادی پر وہ معذرت خواہ ہیں۔ 

شہزاد اکبر

مزید :

صفحہ اول -