آئی جے ٹی زرعی یونیورسٹی نے فیسوں میں 10 فیصد اضافہ مسترد کر دیا

  آئی جے ٹی زرعی یونیورسٹی نے فیسوں میں 10 فیصد اضافہ مسترد کر دیا

  

پشاور (سٹی رپورٹر)اسلامی جمعیت طلبہ جامعہ زرعی پشاور نے ٹیوشن فیس میں دس فیصد اضافہ کو مسترد کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ امسال فیسوں میں دس فیصد اضافہ کا فیصلہ واپس لیا جائے کیونکہ کورونا وباء کے باعث معشییت بری طرح متاثر ہوئی ہے اور طلبہ کے والدین کے معاشی حالات بھی  خرا ب ہے اپنے ایک بیان میں اسلامی جمعیت طلبہ ایگریکلچر یونیورسٹی پشاور کے ناظم علی رحمن نے کہا ہے کہ کورونا وباء کے وجہ سے معیشت بوری طرح سے متاثر ہوا ہے، یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے ٹیوشن فیس لینے کا نوٹیفیکیشن اور میں اضافہ افسوس ناک ہے اور اس طرح کے اقدامات کا مقصد نوجوان نسل کو اعلی تعلیم سے محروم کرنا ہے، وطن عزیز میں پہلے ہی اعلی تعلیم کی شرح چار فیصد سے کم ہے اور موجودہ فیسیں یونیورسٹی  میں اضافہ اس شرح کو مزید کم کردیگا۔انھوں نے مطالبہ کیا کہ امسال فیسوں میں دس فیصد اضافہ واپس لیا جائے تاکہ طلبہ بغیر کسی رکاوٹ اپنا تعلیمی سفر جاری رکھ سکیں۔ ناظم جمعیت علی رحمن نے مزید کہا کہ کورونا وباء کی وجہ سے صوبے کے جامعات کے تمام ہاسٹلز بند رہے ہیں جبکہ طلبہ نے پورے تعلیمی سال کا ہاسٹل فیس ادا کیا ہے لہذا یونیورسٹی انتظامیہ پچھلے چھ مہینوں کے ہاسٹلز چارجز کو نئے سال میں ایڈجسٹ کریں جبکہ آخری سمسٹر کے طلبہ کو گذشتہ چھ مہینوں کے ہاسٹلز فیس کو ری فنڈ کیا جائے جبکہ ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے چیئرمین کے اعلان کے روشنی میں ٹیوشن فیس کے علاوہ دیگر فیس جیسے لائبریری، سپورٹس، امتحانات، ٹورز فیس کو معاف کیا جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -