”میں نے سندھ حکومت کومتعدد بار خط لکھے کسی ایک کاجواب نہیں دیا گیا“میئر کراچی وسیم اختر پریس کانفرنس کے دوران رو پڑے،پریس ریلیز اورخطوط اٹھا کر پھینک دیا

”میں نے سندھ حکومت کومتعدد بار خط لکھے کسی ایک کاجواب نہیں دیا گیا“میئر ...
”میں نے سندھ حکومت کومتعدد بار خط لکھے کسی ایک کاجواب نہیں دیا گیا“میئر کراچی وسیم اختر پریس کانفرنس کے دوران رو پڑے،پریس ریلیز اورخطوط اٹھا کر پھینک دیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)میئر کراچی وسیم اختر پریس کانفرنس کے دوران رو پڑے،میئرکراچی نے وزیراعلیٰ سندھ سمیت وزیراعظم عمران خان پر شدید تنقیدکرتے ہوئے کہاکہ کراچی کو اے ٹی ایم مشین سمجھ رکھا ہے ،میں نے سندھ حکومت کومتعدد بار خط لکھے اور ایک خط کابھی جواب نہیں دیاگیا،وزیراعلیٰ اورحکومت سندھ کی وجہ سے 4 سال ڈپریشن میں رہاہوں ،وسیم اختر نے غصے اورروتے ہوئے پریس ریلیز ،لکھے گئے خطوط کی دستاویز اٹھا کر پھینک دیں۔

میئرکراچی وسیم اختر کاکہناتھا کہ کراچی کے عوام نے ایم کیو ایم کو ووٹ دے کر ایوانوں میں بھیجا،کراچی سمیت سندھ بھر کے دیگر شہروں کے میئربھی کوئی کام نہیں کر سکے،وسیم اخترنے کراچی کے حالات کاذمہ دار سندھ حکومت قراردیتے ہوئے کہاکہ یہ سندھ حکومت کی مجرمانہ غفلت ہے۔

میئرکراچی وسیم اختر نے کہاکہ کراچی میں بلاوجہ اضلاع بنائے جارہے ہیں ،پہلے ملیراورکورنگی ضلع بنایا جو ناکام ہوا،کیماڑی ضلع بنا کراب مزید مسائل پیداکئے جارہے ہیں ،کراچی میں اضلاع پر اضلاع بنائے جارہے ہیں ۔

انہوں نے کہاکہ سب لوگ کہتے ہیں وسیم اخترروتا ہی رہتا ہے ،بتاناچاہتاہوںمیرے رونے سے ہی آج 3 بڑے نالوں کی صفائی کیلئے وفاق میدان میں آیا،وسیم اختر نے کہاکہ پاکستان میں کسی اورمیئرکوکوئی اتنا نہیں جانتا جتنا کراچی کے میئرکوجانتے ہیں ،پارٹی کہے گی تو الیکشن لڑوں گا یا جس کانام دے گی وہ لڑے گا۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -