اب تک کتنے پائلٹس کو لائسنس منسوخ کر کے نوکری سے نکال دیا گیا ہے ؟ وفاقی وزیر ہوابازی غلام سرور پھر بول پڑے 

اب تک کتنے پائلٹس کو لائسنس منسوخ کر کے نوکری سے نکال دیا گیا ہے ؟ وفاقی وزیر ...
اب تک کتنے پائلٹس کو لائسنس منسوخ کر کے نوکری سے نکال دیا گیا ہے ؟ وفاقی وزیر ہوابازی غلام سرور پھر بول پڑے 

  

ٹیکسلا(ڈیلی پاکستان آن لائن )وفاقی وزیربرائےہوابازی غلام سرورخان کاکہناہےکہ ملک میں مافیاکام کررہی ہےجسکی وجہ سےمہنگائی ہوئی ہے،جعلی ڈگری والے ملازمین کو فارغ کرچکے ہیں جس میں 28 پائلٹس کے لائسنس منسوخ کرکے نکال چکے ہیں،جن لوگوں نے35سال لوٹ مار کی وہ واجب القتل ہیں،ان کا احتساب ہونا چاہیے،میرے خلاف نیب کی کارروائی سے کوئی پریشانی نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق ٹیکسلا میں قائم لیبر کمپلیکس کے 504 فلیٹس کے ترقیاتی کام کا جائزہ لینے کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے غلام سرور خان نے کہا کہ 35 سال سے ملک کو لوٹنے والوں کا احتساب ہونا چاہیے، اتنا ظلم ہلاکو خان اور چنگیز خان نے نہیں کیا جتنا دو جماعتوں نے ملک کے ساتھ کیا، جن لوگوں نے 35سال لوٹ مار کی وہ واجب القتل ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے دو سال انتہائی مشکل سے گزارے ہیں، سابقہ حکومت جاتے ہوئے ملک کو دیوالیہ کرگئی، قوم کےلیےآج بھی چور ڈاکو ہیرو اورہمدردیاں ان کےساتھ ہیں،سب کااحتساب ہوناچاہیے ملک میں مافیا کام کررہی ہے جس کی وجہ سے مہنگائی آئی ہے۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ مہنگائی، چینی اور گندم کے بحران میں کاروباری مافیا کا اہم کردار ہے، سندھ میں چینی کی اسمگلنگ اور ذخیرہ اندازوی کی جاتی ہے۔غلام سرور خان نے بتایا کہ 760 جعلی ڈگری والے ملازمین کو فارغ کرچکے ہیں جس میں 28 پائلٹس کے لائسنس منسوخ کرکے نکال چکے ہیں ۔

مزید :

قومی -