گزشتہ دو سالوں میں حکومتی قرض میں کتنا اضافہ ہواہے ؟ وزارت خزانہ نے نئی دستاویز جاری کر دیں 

گزشتہ دو سالوں میں حکومتی قرض میں کتنا اضافہ ہواہے ؟ وزارت خزانہ نے نئی ...
گزشتہ دو سالوں میں حکومتی قرض میں کتنا اضافہ ہواہے ؟ وزارت خزانہ نے نئی دستاویز جاری کر دیں 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )وفاقی وزارت خزانہ نے نئی دستاویزات جاری کر دی ہیں جن کے مطابق گزشتہ دو سالوں کے درمیان حکومتی قرض میں 45 فیصد اضافہ ہو گیاہے ۔

وزارت خزانہ کی جانب سے جاری کی جانے والی نئی دستاویز کے مطابق 2 سالوں میں حکومتی قرضہ جی ڈی پی کے 87 فیصد کے برابر ہوگیا جب کہ قرض میں اضافے کی بڑی وجہ مالی خسارہ پورا کرنے کے لیے لیا گیا قرض ہے۔ دوسری جانب قانون کے مطابق حکومتی قرض جی ڈی پی کے 60 فیصد سے زیادہ نہیں ہونا چاہیے۔ مسلم لیگ (ن) کے دور میں حکومتی قرضہ جی ڈی پی کا تقریباً 73 فیصد تھا۔

یاد رہے کہ اس سے قبل وزیراعظم عمران خان نے ٹویٹر پر پیغام جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ ماشااللہ ،پاکستان کی معیشت درست سمت میں ہے ،کرنٹ اکآنٹ خسارہ کم ہو چکا ہے، جولائی 2019 میں کرنٹ اکاونٹ خسارہ 613 ملین ڈالر تھا،جون 2020 میں کرنٹ اکاونٹ خسارہ 100 ملین ڈالر تھا۔وزیراعظم عمران خان نے اپنے ٹوئٹ میں کہاہے کہ جولائی 2020 میں کرنٹ اکاونٹس خسارہ ختم اور424 ملین ڈالر کرنٹ اکاونٹ سرپلس ہو گیا۔انہوں نے کہاکہ معیشت میں بہتری کی وجہ برآمدات میں اضافہ ہے،جون 2020 کے مقابلے میں برآمدات میں 20 فیصد اضافہ ریکارڈ کیاگیا ہے،بیرون ملک سے بھیجی گئی ترسیلات زر میں بھی اضافہ ریکارڈ ہوا ہے۔

مزید :

قومی -