وزیر اعظم عمران خان نے  گیبریلا کیوس بیرن سے ملاقات میں ایسی بات کہہ دی کہ بھارتی ایوانوں میں کہرام مچ جائے گا 

 وزیر اعظم عمران خان نے  گیبریلا کیوس بیرن سے ملاقات میں ایسی بات کہہ دی کہ ...
 وزیر اعظم عمران خان نے  گیبریلا کیوس بیرن سے ملاقات میں ایسی بات کہہ دی کہ بھارتی ایوانوں میں کہرام مچ جائے گا 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ جنوبی ایشیا میں امن و امان کے لیے  تنازع  کشمیرکا حل ضروری ہے، حکومت کی توجہ لوگوں کی زندگیاں بچانے اور معیشت کی بحالی تھا، پاکستان کی سمارٹ لاک ڈاؤن پالیسی اور دیگر اقدامات سے ملک میں وبا کے سلسلے میں بہتری آئی۔

نجی ٹی وی کے مطابق وزیر اعظم عمران خان   سے  صدر بین الپارلیمانی یونین گیبریلا کیوس بیرن نے ملاقات کی جس دوران  وزیر اعظم نے انھیں کورونا وبا کے باعث صحت کے شعبے کو درپیش چیلنجز سے آگاہ کیا۔وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت کی توجہ لوگوں کی زندگیاں بچانے اور معیشت کی بحالی تھا، پاکستان کی سمارٹ لاک ڈاؤن پالیسی اور دیگر اقدامات سے ملک میں وبا کے سلسلے میں بہتری آئی۔وزیر اعظم نے صدر بین الپارلیمانی یونین گیبریلا بیرن کی خدمات کو سراہا کہا اور کہا کہ پارلیمانی ڈپلومیسی میں گیبریلا بیرن کا کردار اہم ہے۔ملاقات کے سلسلے میں جاری اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ جیسا کہ تنازعات کا حل بین الپارلیمانی یونین کی ترجیح ہے، تو ملاقات میں وزیر اعظم نے دنیا کے مختلف حصوں میں جاری تنازعات کے حل پر زور دیااور کہا کہ جنوبی ایشیا میں امن و امان کے لیے کشمیر تنازع کا حل ضروری ہے۔وزیر اعظم نے گیبریلا کیوس بیرن کو افغانستان کے سیاسی حل کے لیے پاکستانی کاوشوں اور افغان امن عمل میں پاکستانی مثبت کوششوں سے بھی آگاہ کیا۔بین الپارلیمانی یونین کی صدر سے ملاقات میں چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی بھی موجود تھے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -