کراچی اور مانسہرہ میں یکے بعد دیگرے پانچ دھماکے ،دستی بم حملہ ، پانچ افرادجاں بحق، پولیس اہلکاروں سمیت 22زخمی

کراچی اور مانسہرہ میں یکے بعد دیگرے پانچ دھماکے ،دستی بم حملہ ، پانچ ...
  • کراچی اور مانسہرہ میں یکے بعد دیگرے پانچ دھماکے ،دستی بم حملہ ، پانچ افرادجاں بحق، پولیس اہلکاروں سمیت 22زخمی
  • کراچی اور مانسہرہ میں یکے بعد دیگرے پانچ دھماکے ،دستی بم حملہ ، پانچ افرادجاں بحق، پولیس اہلکاروں سمیت 22زخمی
  • کراچی اور مانسہرہ میں یکے بعد دیگرے پانچ دھماکے ،دستی بم حملہ ، پانچ افرادجاں بحق، پولیس اہلکاروں سمیت 22زخمی

کراچی ،مانسہرہ(مانیٹرنگ ڈیسک) شہدائے کربلا کے چہلم کے موقع پر کراچی اور مانسہرہ میں یکے بعد دیگرے پانچ بم دھماکوں اور دستی بم حملوں میں پانچ فرادجاں بحق اور پولیس و ریسکیو اہلکاروں سمیت 22افرادزخمی ہوگئے جنہیں مختلف ہسپتالوں میں منتقل کردیاگیاہے ۔ کراچی میں پہلادھماکہ نمائش چورنگی کے قریب ہی کچھ فاصلے پر جلوس کے شرکاءنماز ظہرین کے لیے صفیں بچھارہاتھاکہ اِسی دوران زور داردھماکہ ہوا جس سے مٹی کی گرد اُٹھی جو دور تک دیکھی جاسکتی تھی ۔ پولیس کے مطابق دھماکہ ریموٹ کنٹرول ڈیوائس کے ذریعے کیاگیا، دھماکہ خیز مواد کٹے ہوئے کھمبے میں رکھاگیاتھا، بم ڈسپوزل سکواڈ کو طلب کرلیاگیاجس نے علاقے کو کلیئر قراردے دیاتاہم جلوس انتظامیہ نے موقف اپنایاکہ ابھی وہاں جلوس نہیں پہنچاتھا اور کیپری سینماءکے قریب ٹائر پھٹنے سے دھماکہ ہوا جس کی وجہ سے روڈ کلیئرہونے کی نشاندہی کے لیے لگایا گیاچونا اُڑا۔ دھماکے کے بعد پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی تاہم انتظامیہ کی جانب سے جلوس کے شرکاء کو اعتماد میں لے لیاگیاہے جس سے شرکاءمیں پائی جانیوالی بے چینی ختم ہوگئی ۔اُدھر کراچی غربی کے علاقے اورنگی ٹاﺅن دس نمبر میں دو مختلف مقامات پر دودھماکے ہوئے جن کے نتیجے میں مجموعی طورپر چارافراد جاں بحق اور 12زخمی ہو گئے جنہیں مختلف ہسپتالوں میں منتقل کردیاگیا۔ ریسکیوذرائع کے مطابق اورنگی ٹاﺅن میں ہونیوالے پہلے دھماکے میں مارے جانیوالے ایک شخص کی لاش عباسی شہید ہسپتال منتقل کردی گئی ۔چوتھادھماکہ قصبہ کالونی اڑھائی نمبر میں ہوا جہاں دستی بم کے حملے میں دوبچوں سمیت تین افرادزخمی ہوگئے جبکہ کسی قسم کے جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی تاہم گھروں کی دیواروں اور کھڑکیوں کو نقصان پہنچا۔  ایڈیشنل آئی جی اور کراچی پولیس کے سربراہ شاہد حیات نے بتایاکہ اورنگی ٹاﺅن دھماکے میں استعمال ہونیوالی ڈیوائس مل گئی ہے ، بارودی مواد موٹرسائیکل میں نصب کیاگیاتھا، جلوس کے راستوں پر دوبارہ چیکنگ شروع کردی گئی ہے ۔ اُنہوں نے دعویٰ کیاکہ دھماکوں کا مقصد خوف وہراس پھیلاناہے ۔اُدھر مانسہرہ میں چکڑالی روڈ پر یکے بعد دیگرے ہونیوالے دو بم دھماکوں میں ایک پولیس اہلکار جاں بحق اور سات زخمی ہوگئے جنہیں ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرہسپتال مانسہرہ منتقل کردیاگیا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق پہلا دھماکے میں ایک پولیس موبائل کو نشانہ بنایاگیاجس کے نتیجے میں چارافرادزخمی ہوگئے جبکہ دوسرا دھماکہ اِسی مقام سے پانچ سو میٹر کے فاصلے پرہواجس میں پولیس لائن کو جانیوالی گاڑی کونشانہ بنایاگیا۔ بتایاگیاہے کہ دھماکے کے نتیجے میں ڈرائیورموقع پر جاں بحق جبکہ تین اہلکار زخمی ہوگئے ہیں ۔ دھماکہ خیزمواد سڑک کنارے پڑاتھاجسے ریموٹ کنڑول کے ذریعے اُڑادیاگیا۔ چکڑالی روڈ کے قریب ہی مانسہرہ جیل اور پولیس لائن موجود ہے ۔

مزید : کراچی /Headlines