ایل پی جی 170روپے فی کلو‘ دکانداروں کی لوٹ مار‘ انتظامی افسر غائب 

ایل پی جی 170روپے فی کلو‘ دکانداروں کی لوٹ مار‘ انتظامی افسر غائب 

  



ملتان‘ عبدالحکیم (سٹاف رپورٹر،سٹی رپورٹر) حکومت مہنگائی پر قابو پانے میں مسلسل ناکام ہوگئی عوام کوسوئی گیس کی عدم دستیابی پر گراں فروشوں کی چاندی‘ ایل پی جی مزید مہنگی کر دی‘  مجبورعوام مہنگائی کے ہاتھوں زندہ درگور ہو کر رہ گئے‘ ایل پی جی کے نرخ 170روپے فی کلو تک پہنچ گئے۔  دکاندار من مرضی کے ریٹ پر فروخت کرنے لگے‘کوئی کنٹرول ریٹ نہیں اور نہ ہی کوئی پوچھنے والا ہے۔تفصیل کے مطابق ضلعی انتظامیہ کی چشم پوشی کے باعث ایل پی جی کی گراں فروشی عروج پر پہنچ گئی ہے۔ جگہ جگہ غیر قانونی طور (بقیہ نمبر55صفحہ12پر)

پر ری فلنگ کرنے والے دکاندار من مرضی ریٹ پر ایل پی جی فروخت کر رہے ہیں اور انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔ سردی بڑھنے پر نرخ یکدم50 روپے فی کلو تک بڑھا دئیے گئے ہیں۔مختلف دکاندار  170روپے فی کلو ایل پی جی فروخت کر رہے ہیں۔ اتو ار کو ایل پی جی 30روپے فی کلو اضافے کے ساتھ150روپے فی کلو فروخت ہوئی جبکہ گزشتہ روز سوموار کو نرخ مزید 20روپے فی کلوبڑھ گئے اور قیمت 170روپے فی کلو تک پہنچ گئی۔ واضح رہے کہ سوئی گیس کی سہولت متعدد علاقوں میں سرے سے ہے ہی نہیں جبکہ بیشتر ایریاز میں سوئی گیس کی بدترین لوڈشیڈنگ ہے‘ سوئی گیس صبح ہوتی ہے‘نہ ہی شام کو ہوتی ہے جبکہ کئی علاقوں میں سوئی گیس کا پریشر نہ ہونے کے برابر ہے‘ مجبوراً ایل پی جی استعمال کرنے والے صارفین سے بھی اب ایل پی جی کی سہولت بھی چھینی جارہی ہے۔  عبدالحکیم و مضافاتی علاقہ جات میں رات و دن کے اوقات میں سوئی گیس کا پریشر بالکل کم ہوتا ہے حتیٰ کہ کھانا بنانا بھی مشکل ہوچکاہے تجارتی و گھریلوصارفین گیس کے سلنڈر خریدنے پر مجبور ہوگئے ہیں کمرشل صارفین نے بتایا کہ دن بھر گیس کی لوڈشیڈنگ وکم پریشر کے سبب کاروبارزندگی ٹھپ ہوگیا ہے گھریلو صارفین نے کہا کہ سردیوں میں گیس کی ضرورریات بڑھنے کے ساتھ محکمہ سوئی گیس نے تاحال پریشر زیادہ نہ کیا ہے صارفین ذہنی اذیت کا شکار ہورہے ہیں متاثرین نے جی ایم گیس ملتان سے اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ہے۔ 

افسر غائب 

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...