علی شیر زئی قبائل کا پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

  علی شیر زئی قبائل کا پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ

  



پشاور(سٹی رپورٹر)علی شیرزئی قبائل سنٹرل کرم نے متنازعہ علاقہ قبضہ مافیا سے وگزار کرانے،مذکورہ علاقہ میں غیر قانونی آبادکاری میں ملوث انتظامی افسران کے خلاف انکوائری اور قوم علی شیر زئی میں امن و امان کو برقرار رکھتے ہوئے علاقہ میں بنیادی سہولیات کو ممکن بنانے کے حوالے سے پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا اورمطالبات پورے نہ ہونے کی صورت میں غیر معنہ مدت کیلئے دھرنا دینے کی دھمکی دی ہے۔مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارز اور بیرنز اٹھا رکھے تھے جس پر انکے مطالبات درج تھے مظاہرے کی قیادت تاج محمد،زاہد شاہ،امیر حمزہ اور دیگر ساتھیو ں نے کی۔اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ سنٹرل کرم میں قوم علی شیر زئی کی شاملاتی اراضی ہے جو 60,000کنال پر مشتمل ہے جو اے پی اے آرڈر،کمشنر کوہاٹ دویژن فاٹٓ ٹربیونل اور ہائی کورٹ نے قوم علی شیر زئی کی مشترکہ شاملات قرار دی ہے مگر چند قبضہ مافیا نے مذکورہ اراضی پر قبضہ کر کے وہاں غیر قانونی طور پر ابادی اور کاشتکاری شروع کی ہے جسکی وجہ سے قوم علی زیر زئی میں اشتعال انگیزی پھیلنے کا خدشہ ہے۔انہوں نے کہا کہ چھ مہینے پہلے ہم نے اس حوالے سے دھرنا بھی دیا تاہم اسسٹنٹ کمشنر سنٹرل کرم نے قوم کے ساتھ تمام مطالبات ماننے کا معادہ کیا جس پر تا حال کوئی کارروائی نہیں ہوئی جبکہ 13نومبر سے چالیس روز تک اپنے مطالبات کے حق میں صدہ ضلع کرم میں دھرنا دیا مگر کوئی شنوائی نہیں ہوئی۔انہوں نے صوبئی حکومت اور دیگر اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ قوم علی شیر زئی کی شاملاتی اراضی کو قبضہ مافیا سے وگزار کرائی جائے اور قبضہ مافیا کی پشت پناہی کرنے والے انتظامی افسارن کے خلاف کاروائی کرن سمیت علاقہ میں امن و امان برقرار رکھنے کلئے اقدمات اٹھائے جائے اور قوم علی شیر زئی کی عوام کو زندگی کے بنیادی سہولیات فراہم کیے جائے جس سے علاقہ کی ترقی ہو بصورت دیگر غیر معینہ مدت کیلئے دھرنا دینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...